پاکستان ،آذربائیجان کامعیشت ، سرمایہ کاری ، تجارت ، توانائی ، دفاع اور زراعت کے شعبوں میں تعلقات مزید بہتر کرنے پر اتفاق۔

پاکستان علاقائی اور عالمی تنازعات کے پرامن حل کا خواہشمند
14 اکتوبر 2016 (17:53)
0

وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان عالمی امن کیلئے علاقائی اور عالمی تنازعات کے پرامن حل کا خواہشمند ہے۔

انہوں نے یہ بات جمعہ کے روز باکو میں آذربائیجان کے صدر الہام علیوف کے ساتھ مشترکہ نیوز کانفرنس سے خطاب کر تے ہوئے کہی۔
نوازشریف نے کہا کہ ہم نے معیشت ، سرمایہ کاری ، تجارت ، توانائی ، دفاع اور زراعت کے شعبوں میں تعلقات مزید بہتر کرنے پر اتفاق کیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان موجودہ تجارتی حجم مواقع سے ہم آہنگ نہیں ہے۔ انہوں نے اقتصادی اور تجارتی تعاون کے فروغ کیلئے اقدامات پر زور دیا۔
وزیراعظم نے نگورنو کاراباخ کے متنازعہ علاقے سے آرمینیا کی فوج کے انخلاء کا مطالبہ کرتے ہوئے کہا کہ یہ معاملہ پرامن اندازمیں حل ہونا چاہیے۔
آذربائیجان کے صدر نے کہا کہ مسئلہ کشمیر اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں کے مطابق حل کیا جانا چاہئیے۔ انہوں نے اس امر پر افسوس ظاہر کیا کہ کشمیر میں رائے شماری سے متعلق عالمی ادارے کی قراردادوں پر عملدرآمد نہیں کیا جارہا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان اور آذربائیجان کے درمیان دوستانہ اور خوشگوار تعلقات ہیں جو علاقائی استحکام کے لئے انتہائی اہمیت کے حامل ہیں۔
اس سے پہلے وزیراعظم نواز شریف اور صدر الہام علیوف نے باکو میں تفصیلی تبادلہ خیال کیا جس میں دوطرفہ تعلقات کے تمام پہلوؤں کا احاطہ کیا گیا۔
نواز شریف نے کہا کہ ان کی حکومت علاقائی روابط کے قیام کی پالیسی پر عمل پیرا ہے اور چین پاکستان اقتصادی راہداری اس کی درخشاں مثال ہے۔انہوں نے کہا کہ ہمارے خطے میں موجود بے پناہ وسائل کو بروئے کار لانے کی ضرورت ہے۔
الہام علیوف نے کہا کہ آذربائیجان پاکستان کے ساتھ اقتصادی تعاون مستحکم کرنے کا خواہشمند ہے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان مختلف شعبوں میں وسیع البنیاد تعاون کو مزید فروغ دینے کی ضرورت ہے۔