مشیرخارجہ نے کہا ہے کہ روس اورچین کی جانب سے یورایشیا کی ترقی،شنگھائی تعاون تنظیم کو فعال بنانے اورایشیائی سرمایہ کاری بنک کی تشکیل ان بڑی تبدیلیوں کاپیش خیمہ ہیں۔

پاکستان اوربھارت کے درمیان کوئی خفیہ سفارتکاری نہیں ہورہی :سرتاج عزیز
14 اکتوبر 2016 (11:03)
0

مشیرخارجہ سرتاج عزیز نے کہاہے کہ عالمی ،جغرافیائی اورتزویراتی سطحوں پرہونیوالی بڑی تبدیلیوں کے تناظر میں پاکستان درست سمت میں گامزن ہے ۔ایک ٹیلی ویژن چینل سے گفتگو کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ روس اورچین کی جانب سے یورایشیا کی ترقی،شنگھائی تعاون تنظیم کو فعال بنانے اورایشیائی سرمایہ کاری بنک کی تشکیل ان بڑی تبدیلیوں کاپیش خیمہ ہیں۔

سفارتی محاذ پرملک کی تنہائی کے تاثرکومسترد کرتے ہوئے سرتاج عزیز نے کہاکہ مغربی ملکوں کی پاکستان کے بارے میں تشویش کی وجہ چین کے ساتھ اس کے بڑھتے ہوئے تعلقات اورتعاون ہے۔
انہوں نے کہاکہ پاکستان خطے میں رابطوں کے مختلف منصوبو ں پر عملدرآمدکررہاہے جن میں کاسا1000 اور تاپی گیس پائپ لائن شامل ہیں۔انہوں نے کہاکہ پاکستان شنگھائی تعاون تنظیم کامستقل رکن بنے گا۔
مشیرخارجہ نے کہاکہ پاکستان کے امریکہ ،برطانیہ، یورپی یونین، مشرق وسطیٰ اور دنیا کے دیگرملکوں کے ساتھ بھی اچھے دوطرفہ تعلقات قائم ہیں ۔ایک سوال کے جواب میں سرتاج عزیز نے کہاکہ پاکستان اوربھارت کے درمیان کوئی خفیہ یاٹریک ٹو سفارتکاری نہیں ہورہی کیونکہ اس طرح کے رابطے دونوں فریقوں کی خواہش پرقائم کئے جاتے ہیں۔