اس واقعہ سے امریکہ کے زیر قیادت جاری حملوں میں طیارے گرانے سے متعلق دولت اسلامیہ کے جنگجوئوں کی صلاحیت کے بارے میں سوالات جنم لے رہے ہیں۔