نواز شریف نے کہا ہے کہ اس سلسلے میں کثیر جہتی اداروں بالخصوص اقوام متحدہ کو غربت کے خاتمے اور عوام کو بااختیار بنانے کیلئے مزید فعال کرنے کی ضرورت ہے۔

14 اپریل 2017 (15:00)
0

وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ خطے کے ممالک کے پاس پڑوسی ملکوں کے خدشات دور کرنے ، عدم مداخلت پر عمل کرنے ، اعتماد بڑھانے اور تنازعات کو پرامن طریقے سے حل کرنے کیلئے تمام سفارتی ذرائع استعمال کرنے کا تاریخی موقع ہے۔وہ اسلام آباد میں چینی صدر شی جن پنگ کی کتاب " چین کی طرز حکمرانی" کے اردو شمارے کی تقریب سے خطاب کررہے تھے۔

انہوں نے کہا کہ اس سلسلے میں کثیر جہتی اداروں بالخصوص اقوام متحدہ کو غربت کے خاتمے اور عوام کو بااختیار بنانے کیلئے مزید فعال کرنے کی ضرورت ہے۔
انہوں نے کہا کہ چین اور پاکستان کے درمیان خصوصی تزویراتی شراکت داری قائم ہے پاکستان کو چین کے بڑے منصوبے ایک پٹی ایک شاہراہ پر عملدرآمد کیلئے چین کے ساتھ مل کر کام کرنے پر فخر ہے۔
وزیراعظم نے کہا کہ ترقی یافتہ ملکوں کے سرمایہ کاروں نے سی پیک میں اعتماد کا اظہار کیا ہے اور پاکستان میں سرمایہ کاری کرنے میں گہری دلچسپی ظاہر کی ہے۔انہوں نے کہا کہ اس ویژن میں کئی اور راہداریاں شامل ہیں، جو ایشیاء ، افریقہ اور یورپ کو پوری دنیا کے ساتھ منسلک کریں گی۔
تقریب سے خطاب کرتے ہوئے پاکستان میں چینی سفیر سن وی ڈونگ نے کہا کہ یہ کتاب پاکستان اور چین کے درمیان گہری دوستی کی ایک نئی علامت ہے۔تقریب میں کابینہ کے ارکان ، ارکان پارلیمنٹ اور سفارتکاروں نے شرکت کی ۔

دریں اثناء چین کی اسٹیٹ کونسل انفارمیشن آفس کے ڈائریکٹرژانگ جیانگو سے آج اسلام آباد میں باتیں کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان چین پاکستان اقتصادی راہداری کو حقیقت کا روب دینے کے چین کے عزم کو دل کی گہرائیوں سے سراہتا ہے۔
نواز شریف نے کہا کہ پاکستان اور چین مضبوط رشتے میں بندھے ہیں ۔ دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات سدابہار تعاون پر مبنی اسٹرٹیجک اشتراک عمل کی انتہائی سطح پر پہنچ گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں کے درمیان تعلقات کو مزید فروغ دینے کیلئے ثقافتی تبادلوں اور عوام کی سطح کے رابطے ناگزیر ہیں۔
ژانگ جیانگو نے پرتپاک استقبال اور پاکستان کے دورے میں اپنے وفد کی میزبانی پر وزیراعظم کا شکریہ ادا کیا۔