شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ حکومت برآمدات کے فروغ اور درآمدات میں کمی لانے پر بھرپور توجہ دے رہی ہے۔

فائل فوٹو

وزیراعظم کا اقتصادی پالیسیوں میں تسلسل یقینی بنانے کیلئے تمام سیاسی جماعتوں کے درمیان وسیع تر مکالمے پر زور
13 اکتوبر 2017 (07:58)
0

وزیراعظم شاہد خاقان عباسی نے کہاہے کہ ملکی معیشت بحال کردی گئی ہے اور 2013 میں اقتصادی سطح پر ہمیں ورثے میں ملنے والے متعدد مسائل کے باوجود شرح نمو میں تیزی سے اضافہ ہورہاہے۔
نجی ٹیلی ویژن چینل سے باتیں کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ حکومت برآمدات کے فروغ اور درآمدات میں کمی لانے پر بھرپور توجہ دے رہی ہے اور اس سلسلے میں اس نے برآمد کنندگان کو مراعات دی ہیں۔
وزیراعظم نے کہاکہ موجودہ حکومت نے اقتصادی شرح نمو کو چھ فیصد تک پہنچا دیا ہے جو گزشتہ حکومت کے دور میں تین اعشاریہ چھ فیصد تھی۔
انہوں نے کہاکہ میں نے اقتصادی پالیسیوں کے معاملے پر تمام سیاسی پارٹیوں کے درمیان وسیع تر مکالمے کی ضرورت پر زور دیا ہے تاکہ ملک میں اقتصادی پالیسیوں کے تسلسل کو یقینی بنایاجاسکے۔
نجکاری پالیسی کے بارے میں وزیراعظم نے کہاکہ حکومت نے جب بھی قومی صنعتوں کی نجکاری کی کوشش کی تو اسے ایک سیاسی مسئلہ بنادیاگیا اور ہم ملک میں عدم استحکام نہیں چاہیے۔
شاہد خاقان عباسی نے کہاکہ پی آئی اے کے مسائل کاواحد حل نجکاری ہے لیکن بدقسمتی سے عدالتوں، صوبوں اور سیاسی جماعتوں میں سے کسی نے اس پر اتفاق نہیں کیا۔
انہوں نے کہاکہ پی آئی اے اور پاکستان سٹیل کی نجکاری کے معاملے پر سیاسی اتفاق رائے پیدا کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ یہ دونوں ایسے بڑے ادارے ہیں جن سے قومی خزانے کو اربوں روپے کانقصان پہنچ رہاہے۔
ایک سوال پروزیراعظم نے کہاکہ اس وقت اسحاق ڈار پاکستان کے بہترین وزیرخزانہ ہیں اور انہوں نے ملکی معیشت کے استحکام میں بے مثال کردار ادا کیاہے۔
ایک اور سوال پر انہوں نے ایل این جی معاہدے کے بارے میں الزامات کو مسترد کردیا اور کہاکہ قطر کے ساتھ شفاف معاہدہ کیاگیاتھا۔

وزیراعظم نے کہاکہ ایل این جی معاہدے کے بارے میں تمام تر تفصیلات پارلیمنٹ کی قائمہ کمیٹی کے سامنے پیش کردی گئی ہیں اور اسے شائع بھی کردیاگیاہے۔