نوازشریف نے تمام سیاسی جماعتوں پر زور دیا کہ وہ تمام مسائل خصوصاً توانائی بحران پر قابو پانے کے لئے حکومت کا ساتھ دیں۔

پاکستان میں توانائی کی مسابقتی منڈی قائم کی جائیگی:وزیراعظم
13 نومبر 2014 (18:04)
0

وزیراعظم نوازشریف نے کہا ہے کہ حکومت سرمایہ کاروں کے فائدے اور صارفین کے حقوق کے تحفظ کیلئے پاکستان میں توانائی کے شعبے میں مسابقتی منڈی قائم کرے گی۔انہوں نے یہ بات جمعرات کو لندن میں پاکستان برطانیہ توانائی مکالمے اور سرمایہ کاری کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔وزیراعظم نے کہا کہ میں نے اپنی ٹیم سے کہا ہے کہ وہ بجلی اورگیس کے شعبوں میں پیداوار\\\' تقسیم اور ترسیل کے لئے سرمایہ کاری کے مواقع تلاش کرے۔نوازشریف نے کہا کہ حکومت خدمات کی بہتری کے لئے انتظامی کنٹرول دینے کو تیار ہے \\\' تاہم زیادہ حصص حکومت کے پاس رہیں گے۔انہوں نے کہا کہ علاقائی روابط سے اقتصادی ترقی میں اضافہ ہوتا ہے۔


وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان تھر کے علاقے میں دنیا کے کوئلے کے سب سے بڑے ذخائر سے فائدہ اٹھانا چاہتا ہے جو اس کے لئے توانائی کا اہم ذریعہ ثابت ہوں گے۔انہوں نے یقین ظاہر کیا کہ ان اقدامات سے پاکستان کے اقتصادی مسائل کا تجارتی طور پر قابل عمل حل فراہم ہوگا اور خطے میں امن و استحکام کو فروغ ملے گا۔


نواز شریف نے کہا کہ مسلم لیگ نون کی حکومت نے مشکل فیصلے کیے جن کے نتیجے میں بڑے اقتصادی اشاریوں میں نمایاں بہتری آئی \\\' حکومت گزشتہ سال بجٹ خسارہ آٹھ فیصد سے کم کرکے چھ فیصد پر لائی اوررواں مالی سال کے آخر میں یہ مزید کم کرکے پانچ فیصد تک لایا جائے گا۔ انہوں نے کہا کہ مجموعی ملکی پیداوار کی شرح نمو اس سال تقریباً پانچ فیصد رہنے کی توقع ہے اور موجودہ حکومت کی مدت ختم ہونے تک یہ سات فیصد ہو جائے گی۔

بعد میں صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے وزیراعظم نوازشریف نے تمام سیاسی جماعتوں پر زور دیا کہ وہ تمام مسائل خصوصاً توانائی بحران پر قابو پانے کے لئے حکومت کا ساتھ دیں۔
انہوں نے کہا کہ مظاہرے کرنے والی جماعتوں کے ترقی کے عمل میں رکاوٹ ڈالنے کے منصوبے ناکام ہوگئے ہیں۔


نوازشریف نے کہا کہ توانائی ایک بہت بڑا مسئلہ ہے اور اگر ہم نے مل کر اس کا مقابلہ کیا تو اس سے آئندہ آنے والی حکومت پر دبائو کم ہوگا \' انہوں نے کہا کہ پاکستان ترقی کے راستے پر آگے بڑھ رہا ہے اور تاریکی کے بادل چھٹ رہے ہیں۔


وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کو بے شمار وسائل سے نوازا گیا ہے جو غربت اور بے روزگاری ختم کرنے میں مدد کرسکتے ہیں۔