نوازشریف نے کہا ہے کہ حکومت تمام قومی معاملات کو اتفاق رائے سے حل کرنے پر یقین رکھتی ہے۔

اقتصادی راہداری سے پورے ملک کو فائدہ پہنچے گا:وزیراعظم
13 مئی 2015 (19:29)
0

وزیراعظم نواز شریف نے کہا ہے کہ حکومت تمام قومی معاملات کو اتفاق رائے سے حل کرنے پر یقین رکھتی ہے۔
وہ بدھ کے روز اسلام آباد میں پارلیمانی رہنماؤں کے اجلاس سے خطاب کررہے تھے جس کا مقصد انہیں پاکستان چین اقتصادی راہداری منصوبے پر اعتماد میں لینا تھا۔
انہوں نے کہا کہ مشاورت جمہوریت کی روح ہے اور ہم نے معیشت ، سلامتی اور دہشتگردی سمیت تمام اہم قومی امور پر ہمیشہ پارلیمنٹ کو اعتماد میں لیا ہے۔
وزیراعظم نے کہا کہ ایسے عناصر جوملکی ترقی میں رکاوٹیں پیدا کررہے ہیں وہ اقتصادی راہداری سے نالاں ہیں انہوں نے کہا کہ اس منصوبے سے ملک کے تمام علاقوں کو فائدہ پہنچے گا۔
اس موقع پر سیاسی رہنماؤں نے کراچی بس حادثے میں جاں بحق ہونے والوں کیلئے فاتحہ خوانی کی۔
منصوبہ بندی کے وزیر احسن اقبال نے اپنی بریفنگ میں بتایا کہ پاک چین اقتصادی راہداری کا مقصد طویل المدتی پروگرام کے تحت ملک کے تمام حصوں کی یکساں ترقی کو یقینی بنانا ہے جو دو ہزار تیس میں مکمل ہو گا۔
انہوں نے کہا کہ مجوزہ پاک چین اقتصادی راہداری سے تاریخی چینی سرمایہ کاری اور بین الاقوامی سرمایہ کاری کو راغب کرنے میں بھی مدد ملے گی۔
انہوں نے کہا کہ توانائی ، بنیادی ڈھانچے ، گوادر بندرگاہ کی ترقی اور ٹرانسپورٹیشن کی بہتری کے شعبوں میں چار ورکنگ گروپس تشکیل دئیے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ دونوں ملکوں نے صنعتی پارک اوراقتصادی زونز کے قیام کیلئے پانچواں ورکنگ گروپ تشکیل دینے پر بھی اتفاق کیا ہے۔

انہوں نے کہا کہ ملک کی تیزرفتار اور پائیدار ترقی یقینی بنانے کیلئے کئی منصوبے خصوصاً توانائی کے شعبے میں قلیل ' درمیانے اور طویل مدتی منصوبے مکمل کیے جائیں گے ' وزیراعظم نے کہا کہ گوادر کی گہرے پانی کی بندرگاہ اور بین الاقوامی ہوائی اڈے کی ترقی اور گوادر کوملک کے باقی حصوں اورچین سے ملانے کیلئے سڑک اور ریل رابطوں کے قیام پر خصوصی توجہ دی جارہی ہے۔
احسن اقبال نے کہا کہ گوادر کو تمام صوبائی دارالحکومتوں اور ایک دوسرے سے ملانے کیلئے چار روٹ تعمیر کیے جائیں گے جس سے پورے ملک کو فائدہ ہوگا۔
انہوں نے کہاکہ اس منصوبے کے تحت لاہور سے کراچی موٹروے مکمل کرنے کے علاوہ سہراب کوئٹہ روڈز کو براستہ لورالائی' ڈیرہ اسماعیل خان ملایا جائے گا اور اسے پشاور تک توسیع دی جائے گی اور فتح جنگ ' تلہ گنگ ' میانوالی روڈ کوتعمیر کرکے رتوڈیرو سے ملایا جائے گا' انہوں نے کہا کہ راہداری منصوبے کے تحت کسی نئے روٹ کی تجویز نہیں دی گئی ہے انہوں نے راہداری کے کسی روٹ میں تبدیلی کے تاثر کو مسترد کر دیا۔
احسن اقبال نے کہا کہ ملک کے مختلف علاقوںمیں بجلی کے کئی منصوبے مکمل کیے جائیں گے جن سے دس ہزار چارسو میگاواٹ بجلی پیدا ہوگی۔