پاکستان نے ذکی الرحمن کیس میں بھارتی تحفظات مسترد کر دئیے
13 مارچ 2015 (22:43)
0

پاکستان نے ذکی الرحمن لکھوی کیس میں بھارت کے تحفظات مسترد کرتے ہوئے کہا کہ اس نے ہمیشہ بھارت کیساتھ تعاون کیا اور ٹرائل سے متعلق بھارت کے فراہم کردہ تمام شواہد عدالت میں پیش کئے۔
سرکاری ذرائع نے جمعہ کی رات اسلام آباد میں بتایا ہے کہ ذکی الرحمن لکھوی کی رہائی کا تعلق ممبئی حملوں کے مقدمہ سے نہیں ہے۔
ذرائع نے کہا کہ بھارت کا یہ موقف کہ پاکستان نے شواہد عدالت میں پیش نہیں کئے جھوٹ کا پلندہ ہے انہوں نے کہا کہ بھارت اپنے ذرائع ابلاغ کے ذریعے ممبئی حملوں کے مسئلے پر بے بنیاد پروپیگنڈا کر رہا ہے۔
ذائع نے کہا کہ بھارت نے غیر سنجیدگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے کبھی بھی حملے کے نام نہاد ذمہ دار اور چشم دید گواہ اجمل قصاب تک پاکستانی وکلائ،استغاثہ کو رسائی نہیں دی۔انہوں نے کہا کہ بھارت نے واحد چشم دید گواہ کو جرح کے بغیر پھانسی دیکر مقدمے کو پیچیدہ بنا دیا ہے۔ پاکستان مقدمے کو اس کے منطقی انجام تک پہنچانا چاہتا ہے لیکن بھارت خود انصاف کی راہ میں بڑی رکاوٹ ہے۔
ذرائع نے سمجھوتہ ایکسپریس پر دہشت گردوں کے حملے کے بارے میں کہا کہ یہ راشٹریا سویم سیوک سنگھ کی بہیمانہ اور سوچی سمجھی کارروائی تھی جو بھارتیہ جنتا پارٹی کے دور اقتدار میں ہمیشہ بھارتی سرکاری محکموں میں منظم دخل اندازی کرتی ہے۔
ذرائع نے کہا کہ آر ایس ایس کی جانب سے ان دہشت گرد حملوں کا مقصد عوام کے درمیان رابطوں اور اعتماد سازی کے اقدامات کو سبوتاژ کرنا ہے۔
ذرائع نے کہا کہ بھارتی ذرائع ابلاغ انتہائی درجے کا جانبدار ہے اور اس نے ہمیشہ حقائق مبنی اطلاعات کو پس پشت ڈالا ہے۔