ایران کے ایٹمی پروگرام کو منجمد کرنے کے حوالے سے عبوری معاہدے کا اطلاق اس مہینے کی بیس تاریخ سے ہو گا۔

13 جنوری 2014 (12:18)
0

عالمی طاقتوں کے ساتھ مذاکرات کے نتیجے میں گزشتہ سال نومبر میں طے پانے والے اس معاہدے کے تحت ایران پر عائد بعض عالمی پابندیوں میں نرمی کی گئی ہے۔



ایران نے یورینیم افزودگی محدود کرنے اور اپنی ایٹمی تنصیبات کو بین الاقوامی ماہرین کے معائنے کے لئے کھولنے پر رضامندی ظاہر کی ہے۔



ایران کے نائب وزیر خارجہ عباس Araghchi نے کہا ہے کہ اس معاہدے کے تحت ایران تیل کی مد میں چار ارب دو کروڑ ڈالر کا زرمبادلہ حاصل کرے گا۔


 


صدر باراک اوبامہ نے اس معاہدے کا خیرمقدم کیا تاہم انہوں نے طویل مدتی معاہدے کے لئے مزید کام کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔ انہوں نے خبردار کیا کہ اگر معاہدے کی خلاف ورزی ہوئی تو ایران پر نئی پابندیاں لگائی جا سکتی ہیں۔