احسن اقبال نے ایوان کو بتایا کہ لاہوراورنج لائن میٹرو ماس ٹرانزٹ منصوبہ، گریٹر پشاور ریجن ماس ٹرانزٹ سسٹم، کراچی سرکلر ریلوے اور کوئٹہ ماس ٹرانزٹ سسٹم اقتصادی راہداری کا حصہ ہیں۔

File photo

اقتصادی راہداری، صوبوں میں ریلوے نقل و حمل کا نظام قائم کیا جا رہا ہے،احسن
13 اپریل 2017 (18:00)
0

سینٹ کو آج بتایا گیا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت ریل کے ذریعے بڑے پیمانے پر سامان کی نقل و حمل کا نظام چاروں صوبوں میں قائم کیا جارہا ہے۔

منصوبہ بندی، ترقی و اصلاحات کے وزیر احسن اقبال نے وقفہ سوالات کے دوران ایوان کو بتایا کہ لاہوراورنج لائن میٹرو ماس ٹرانزٹ منصوبہ، گریٹر پشاور ریجن ماس ٹرانزٹ سسٹم، کراچی سرکلر ریلوے اور کوئٹہ ماس ٹرانزٹ سسٹم چین پاکستان اقتصادی راہداری کا حصہ ہیں۔
ایک سوال کے جواب میں منصوبہ بندی کے وزیر نے کہا کہ ان منصوبوں کے علاوہ سندھ میں کوئلے سے بجلی پیدا کرنے والی پورٹ قاسم الیکٹرک کمپنی، پورٹ قاسم میں صنعتی پارک کے قیام اور کوئٹہ میں پانی کی فراہمی اسکیم بھی اقتصادی راہداری منصوبے کے تحت مکمل کیے جائیں گے۔
ایک سوال پر منصوبہ بندی کے وزیر نے کہا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری منصوبے کے تحت چاروں صوبوں ، فاٹا، آزاد کشمیر اور گلگت بلتستان میں ایک ایک اقتصادی زون اور دارالحکومت اسلام آباد میں دو اقتصادی زونز قائم کیے جائیں گے۔
ایک سوال کے جواب میں احسن اقبال نے کہا کہ ملک میں بجلی کی کمی پر قابو پانے کیلئے قومی گرڈ میں اگلے سال مئی تک دس ہزار میگاواٹ بجلی شامل کی جائے گی۔