Thursday, 12 December 2019, 06:08:18 pm
ہیومن رائٹس واچ کا مقبوضہ کشمیر میں سیاسی رہنماؤں کی رہائی، صحافیوں اور آزاد مبصرین کی رسائی کا مطالبہ
August 13, 2019

بین الاقوامی غیر سرکاری تنظیم ہیومن رائٹس واچ نے بھارت حکومت سے مقوبہ کشمیر میں مواصلات کے بلیک آئوٹ کو ختم کرنے اور واپسی کی راہ اختیار کرنے کا مطالبہ کیا ہے۔

ہیومین رائٹس واچ جنوبی ایشیاء کی ڈائریکٹرMeena Kshi گنگولی نے ایک رپورٹ میں اشکار کیا ہے کہ کشمیری لاگ ڈائون میں زندگی گزارنے پر مجبور ہیں ان کے رہنمائوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے جبکہ خاندان اپنے عزیزوں سے رابطہ کرنے سے محروم ہیں۔

انہوں نے کہا کہ علاج معالجے کی سہولتوں تک رسائی ممکن نہیں ہے۔سکیورٹی فورسز نے مظاہرین پر آنسو گیس اور پیلٹس سے فائرنگ کی اور کارکنوں کو گرفتار کر لیا گیا ہے۔

انہوں نے بھارتی حکام پر زور دیا کہ انسانی حقوق کی خلاف ورزیوں پر انصاف اور احتساب کو یقینی بنایا جائے اور پبلک سیفٹی ایکٹ اور مسلح افواج کے خصوصی اختیارات کے قوانین کو ختم کیا جائے جن کے تحت فوج کو من مانی کرنے کا استثنیٰ ہے۔انہوں نے حکام سے سیاسی قیدیوں کو رہا کرنے، مواصلاتی بلیک آؤٹ ختم کرنے، ذرائع ابلاغ اور غیرجانبدار مبصروں تک رسائی اور سکیورٹی اہلکاروں کو انسانی حقوق کا احترام کرنے کا حکم دینے کا مطالبہ بھی کیا۔