Sunday, 26 May 2019, 06:33:23 am
سکھ برادری نے بیساکھی منانے کیلئے تمام تیاریاں مکمل کرلیں
April 13, 2019

آج گودوارہ پنجہ صاحب حسن ابدال میں بیساکھی میلے کی تقریبات دوسرے دن بھی جاری رہیں۔

پاکستان، بھارت، کینیڈا اور برطانیہ سمیت دنیا بھر سے سکھ برادری میلے میں شرکت کر رہی ہے۔

بیساکھی میلے میں آج نگرKEERTAN نامی جلوس روایتی اور مذہبی رسومات کے ساتھ گوردوارہ پنجہ صاحب کی حدود کے اندر ہی نکالے گئے۔

ریڈیو پاکستان اسلام آباد کے نمائندے محمد اکرم خان سے گفتگو کرتے ہوئے متروکہ وقف املاک بورڈ کے ترجمان عامر ہاشمی نے کہا کہ پاکستان، بھارت اور دیگر ممالک سے تقریباً دس ہزار سکھ یاتری میلے میں شرکت کر رہے ہیں۔انہوں نے کہا کہ تقریباً دو ہزار یاتری بھارت سے آئے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عمران خان اور مذہبی امور کے وزیر ڈاکٹر نورالحق قادری کی خصوصی ہدایات پر متروکہ وقف املاک بورڈ سکھ یاتریوں کی خصوصی دیکھ بھال کر رہا ہے۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان ایک امن پسند ملک ہے جہاں تمام اقلیتیں مکمل ہم آہنگی اور خوش دلی کے ساتھ رہ رہی ہیں۔

انہوں نے کہا کہ مہمانوں کی سکیورٹی یقینی بنانے کیلئے گوردوارہ اور اس کے گردونواح میں سکیورٹی کے جامع انتظامات کئے گئے ہیں۔انہوں نے کہا کہ متروکہ وقف املاک بورڈ یاتریوں کوخوراک، رہائش، سفر اور طبی سہولتیں فراہم کر رہا ہے۔

عامر ہاشمی نے کہا کہ دسویں سکھ گورو گوبند سنگھ جی کی جانب سے شروع کئے گئے خالصہ پنتھ کو منانے کے لئے بیساکھی میلے کی آخری اور اختتامی تقریب کل پنجہ صاحب میں ہو گی۔

مذہبی اہمیت کے علاوہ بیساکھی کی ثقافتی اور روایتی اہمیت بھی ہے۔پنجاب کے لوگ اچھی فصل کے لئے خدا کا شکر ادا کرتے ہیںاور اس سے نقد آور فصل گندم کی کٹائی کا موسم شروع ہوتا ہے۔

روایتی لباس میں ملبوس مرد اور خواتین بیساکھی منانے کیلئے اپنے کھیتوں کی طرف جاتے ہیں۔ بیساکھی میلوں کی بڑی تقریبات میں بھنگڑااور گدہ کے علاوہ کشتی کے مقابلے' گلوکاری اور بازی گری ہیں۔ لوک موسیقی کے آلات و نجلی اور الغوزہ بجانے کے مظاہرے بھی تقریبات کا حصہ ہیں۔

کھانے پینے کی چیزوں کے سٹالز اور روایتی اشیاء کی دکانیں بیساکھی میلے کو مزید رنگارنگ بناتی ہیں۔