Monday, 22 April 2019, 12:12:21 pm
پائیدار معاشی ترقی کا حصول،حکومت قومی اداروں کی استعداد کار بہتر بنا رہی ہے،وزیر خزانہ
March 13, 2019

وزیر خزانہ اسد عمر نے کہا ہے کہ حکومت معیشت کے اہم اداروں کی تنظیم نو اور ریگولیٹری اداروں کو مضبوط بنانے کے لئے ملک اور بیرون ملک سے بہترین ماہرین کو ان اداروں کے پالیسی ساز بورڈز میں تعینات کرنے پر کام کر رہی ہے۔

اسلام آباد میں کاروباری رہنماؤں کے دور وزہ سربراہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ اس سے قومی اداروں کی استعداد کار میں یقینی طور پر بہتری آئے گی جس سے ملک میں پائیدار طویل مدت اقتصادی استحکام کا حصول ممکن ہو گا۔وفاقی وزیر نے کہا کہ حکومت نے سرکاری اداروں کے کام کرنے کی صلاحیتیں بہتر بنانے کے لئے بہترین ماہرین کو شفاف انداز میں منتخب کرنے کی غرض سے پانچ رکنی کمیٹی تشکیل دی ہے۔انہوں نے کہا کہ ریگولیٹری اداروں کو مضبوط بنایا گیا ہے اور سکیورٹیز اینڈ ایکس چینج کمیشن کے پالیسی بورڈ میں شعبے کے بہترین ماہرین کو شامل کیا گیا ہے۔انہوں نے ٹیکس دوست کلچر اور ٹیکس دہندگان کی سہولت کو فروغ دینے کیلئے پہلی مرتبہ ایف بی آر کے پالیسی بورڈ میں نجی شعبے کے ارکان کو شامل کیا گیا ہے۔اس کے علاوہ انہوں نے کہا کہ حکومت نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کو نیشنل بینک، زرعی ترقیاتی بینک، این آئی ٹی اور دیگر قومی اداروں کے سربراہوں کے طور پر میرٹ پر اور بغیر سیاسی مداخلت تعینات کیا۔اسد عمر نے کہا کہ چھوٹے اور درمیانے درجے کے اداروں کو قرضوں تک رسائی کے مسائل کا سامنا ہے اور حکومت آسان شرائط پر قرضوں کی فراہمی یقینی بنا کر ان مسائل کے حل کیلئے اقدامات کر رہی ہے۔وزیر خزانہ نے کہا کہ حکومت ٹیکس چوری کے مسائل پر قابو پانے کے لئے ٹیکنالوجی کو بہتر بنا رہی ہے اور آئندہ ماہ تک ٹریک اینڈ ٹریس سسٹم نصب کر دیا جائے گا۔ پہلے مرحلے میں اس نظام کو تمباکو کے شعبے میں نصب کیا جائے گا تاکہ انڈر انوائسنگ پر نظر رکھی جا سکے۔انہوں نے کہا کہ نادرا اور ایف بی آر سمیت اعداد و شمار جمع کرنے والے اداروں کے درمیان رابطے کو مزید مضبوط بنایا جائے گا تاکہ ٹیکس ادا کرنے کے اہل افراد کو ٹیکس کے دائرے میں لایا جا سکے۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے برآمدی شعبے کو سہولتیں فراہم کی ہیں اور ٹیکسٹائل کے شعبے سے نتائج آئندہ ماہ آنا شروع ہو جائیں گے۔اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے تجارت اور ٹیکسٹائل کی صنعت کے بارے میں وزیراعظم کے مشیر عبدالرزاق داؤد نے کہا کہ حکومت چھوٹے اور درمیانے درجے کی صنعتوں کے فروغ اور ان کے استعمال میں آنے والے خام مال کی درآمد پر ٹیکس کم کرنے کے لئے اقدامات کر رہی ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت ڈیوٹی اور ٹیکسوں کی چھوٹ کی سکیم میں بھی ترمیم کر رہی ہے اور جلد اسے منظور کر لیا جائے گا۔عبدالرزاق داؤد نے کہا کہ حکومت صنعتی شعبے کی ترقی کے لئے بھی اقدامات کر رہی ہے تاکہ برآمدات میں اضافے کے ساتھ درآمدات کی حوصلہ شکنی کی جائے اور زرمبادلہ کے ذخائر پر اضافی دباؤ کم کیا جا سکے۔