Monday, 22 October 2018, 11:44:51 pm
جموں کے مسلمان رہنماؤں کی مسلمانوں کو جموں سے ہجرت پرمجبور کرنے پرتشویش
February 13, 2018

  مقبوضہ کشمیرمیں جموں کے مسلمان رہنماؤں نے مسلمانوں کو جموں سے ہجرت پر مجبور کرنے کے بی جے پی اور آر ایس ایس کے منصوبے پر تشویش ظاہر کی ہے ۔کشمیرمیڈیاسروس کے مطابق قبائلی رابطہ کمیٹی کے چیئرمین طالب حسین نے سرینگر میں ایک پریس کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کہاکہ ہندو بلوائی جموں خاص طورپر سانبہ اور کٹھوعہ کے اضلاع کے مسلمانوں کو ہراساں کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہاکہ گزشتہ ماہ کٹھوعہ میں اسپیشل پولیس آفیسردیپک کھجوریہ کی طرف سے آٹھ سالہ بچی آصفہ کی بے حرمتی اور قتل مسلمانوں کو خوف زدہ کرنے کی سازشوں کا حصہ تھا۔ ادھر آج سرینگر کے علاقے کیرن نگر میں دو روز سے جاری جھڑپ کے دوران دو نوجوان شہید اور بھارتی سینٹرل ریزروپولیس فورس کے دواہلکار ہلاک ہوگئے ۔ کشمیریوں کے قتل کے خلاف جنوبی کشمیر کے علاقے قاضی گنڈ میں ہڑتال کی گئی۔کٹھ پتلی انتظامیہ نے نوجوانوں کو مظاہرے کرنے سے روکنے کیلئے سرینگر کے مختلف علاقوں میں پابندیاں نافذ کردیں انتظامیہ نے پورے شہر میں موبائل انٹرنیٹ سروس بھی معطل کردی ۔دریں اثناء کل جماعتی حریت کانفرنس کے چیئرمین سیدعلی گیلانی نے سرینگر میں جاری ایک بیان میں تحریک وحدت اسلامی کے رہنماء یوسف ندیم راتھر کے قتل کی شدید مذمت کی ہے جنہیں نامعلوم مسلح افراد نے پیر کو  بڈگام کے علاقے چرن گام میں گولی مارکر قتل کردیاتھا۔