آفتاب احمد نے ایوان کو بتایا کہ ان میں سے سات منصوبے آئندہ سال تک مکمل ہوں گے۔

اقتصادی راہداری کے تحت شاہراتی منصوبوں پر کام جاری
12 جنوری 2017 (17:59)
0

سینیٹ کو جمعرات کے روزبتایا گیا کہ ملک بھر میں چین پاکستان اقتصادی راہداری کے تحت سولہ سو ساٹھ کلومیٹر طویل شاہراہوں کے منصوبوں پر کام جاری ہے۔
پارلیمانی امور کے وزیر شیخ آفتاب احمد نے ایوان کو وقفہ سوالات کے دوران بتایا کہ ان میں سے سات منصوبے آئندہ سال تک مکمل ہوں گے جبکہ ایک منصوبہ2019 اور ایک2020 میں مکمل ہوگا۔
وفاقی تعلیم اور پیشہ ورانہ تربیت کے وزیر مملکت محمد بلیغ الرحمن نے ایوان کو بتایا کہ ملک بھر کے ایک سو ستانوے اداروں میں اقتصادی راہداری سے متعلقہ38 تجارتی شعبوں میں نوجوانوں کو تربیت دی جارہی ہے۔
انہوں نے کہا کہ چینی زبان پر توجہ دی جارہی ہے اور 28 یونیورسٹیوں میں چینی زبان کے کورسز شروع ہوگئے ہیں۔
ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کے نوجوانوں میں ہنرمندی کے فروغ کے پروگرام کے تحت گزشتہ سال کے دوران مختلف تجارتی شعبوں میں ملک کے 25 ہزار نوجوانوں کو تربیت دی گئی، انہوں نے کہا کہ اس سال 50 ہزار طلباء زیر تربیت ہیں اور اس تعداد کو اگلے سال بڑھا کر ایک لاکھ کر دیا جائے گا۔


ایک سوال کے جواب میں وزیرپٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے ایوان کو بتایا کہ حکومت نے بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کی فلاح و بہبود کے لئے کئی اقدامات کیے ہیں انہوں نے کہا کہ بیرون ملک مقیم پاکستانیوں کے لئے سات ہائوسنگ سکیمیں مکمل ہوگئی ہیں اور دو سکیموں پر کام جاری ہے۔
ایک سوال کے جواب میں بندرگاہوں اور جہازرانی کے وزیر میر حاصل خان بزنجو نے ایوان کو بتایا کہ گزشتہ سال کے دوران وزارت کے سرکاری شعبے کے ترقیاتی پروگرام کے بارہ منصوبوں کے لئے نوے لاکھ روپے مختص کیے گئے۔
ایک سوال کے جواب میں تحفظ خوراک اور تحقیق کے قومی ادارے کے وزیر سکندر حیات خان بوسن نے ایوان کو بتایا کہ حکومت نے گزشتہ تین سال کے دوران گندم کی درآمد پر ریگولیٹری ڈیوٹی میں دس سے ساٹھ فیصد تک اضافہ کیا تاکہ اس کی درآمد کی حوصلہ شکنی کی جاسکے کیونکہ بعض ممالک میں گندم کی قیمت کم ہے۔
کھاد پر اعانت کے خاتمے کے حوالے سے ایک نقطہ اعتراض کے جواب میں قومی تحفظ خوراک کے وزیر سکندر حیات خان بوسن نے کہا کہ یہ سکیم گزشتہ سال وفاق اور صوبوں کی طرف سے برابر حصے کے تحت ستائیس ارب چھیانوے کروڑ روپے کی لاگت سے شروع کی گئی تھی۔
انہوں نے کہا کہ یہ رقم استعمال کی جاچکی ہے اور یہ پروگرام گزشتہ پیر کو ختم کر دیا گیا۔
ایوان کا اجلاس اب کل صبح ساڑھے بجے ہوگا۔