سیکرٹری خارجہ نے کہاہے کہ امن پسندپاکستان کوقومی سلامتی کو لاحق شدید خطرات کے باعث ایٹمی ہتھیار حاصل کرنے پر مجبور ہوناپڑا۔

نیوکلیئرسپلائرز گروپ کی رکنیت کے حوالے سے کسی قسم کا امتیاز قبول نہیں کیاجائےگا:اعزازچوہدری
12 فروری 2016 (15:00)
0

سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چوہدری نے کہا ہے کہ جنوبی ایشیاء میں نیوکلیئرسپلائرز گروپ کی رکنیت کے حوالے سے کسی قسم کا امتیاز قبول نہیں کیا جائےگا۔آج اسلام آباد میں انسٹی ٹیوٹ آف سٹرٹیجک سٹڈیز میں خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ دو ہزار پانچ میں بھارت امریکہ سول ایٹمی معاہدے کے نتیجے میں جنوبی ایشیاء میں سٹرٹیجک استحکام پر منفی اثرات مرتب ہوئے ہیں۔سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ امن پسندپاکستان کوقومی سلامتی کو لاحق شدید خطرات کے باعث ایٹمی ہتھیار حاصل کرنے پر مجبور ہوناپڑا۔

اعزازاحمد چوہدری نے کہا کہ پاکستان نیوکلئیر سپلائر گروپ کی رکنیت کا مستحق ہے ۔ انہوں نے کہا کہ وژن 2015 کے تحت توانائی کی پیداوارکے ہدف کے حصول کیلئے پاکستان کی گروپ کی رکنیت انتہائی اہمیت کی حامل ہے۔سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ ملک کے ایٹمی اثاثے ، ایٹمی توانائی کے عالمی ادارے کے قواعدوضوابط کے مطابق محفوظ ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان عالمی ادارے کے معیارات کی مکمل پاسداری کرتا ہے۔

اس موقع پر خطاب کرتے ہوئے ڈائریکٹر جنرل انسٹی ٹیوٹ آف سٹرٹیجک سٹڈیز مسعود خان نے اس بات پر افسوس کا اظہار کیا کہ بھارت نے خطے میں امن واستحکام کیلئے پاکستان کی طرف سے پیش کردہ متعدد تجاویز کا مناسب جواب نہیں دیا۔انہوں نے کہا کہ بھارت توانائی کے شعبے میں پاکستان کی ترقی میں رکاوٹیں ڈال رہا ہے۔