وزیراعلیٰ نے کہا کہ سکولوں پر حملے بزدلانہ کارروائیاں ہیں ۔

تعلیمی اداروں کے تحفظ کیلئے خصوصی انتظامات کئے ہیں:کھوڑو
12 فروری 2016 (20:10)
0

سندھ اسمبلی کا اجلاس ایک ہفتے کے وقفے کے بعد سپیکر آغا سراج درانی کی صدارت میں جمعہ کے روز کراچی میں دوبارہ شروع ہوا۔
قائد حزب اختلاف خواجہ اظہار الحسن نے ایک نکتہ اعتراض پر کراچی میں تین گرینیڈ حملوں کا ذکر کیا۔
تعلیم کے سینئر وزیر نثار احمد کھوڑونے نکتہ اعتراض کا جواب دیتے ہوئے کہا کہ حکومت نے تعلیمی اداروں کے تحفظ کیلئے خصوصی انتظامات کیے ہیں تاہم یہ بات قابل افسوس ہے کہ دہشت گرد پھر بھی تین گرینیڈ حملے کرنے میں کامیاب ہوئے۔
وزیراعلیٰ سید قائم علی شاہ نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ سکولوں پر حملے بزدلانہ کارروائیاں ہیں لیکن صوبے میں دہشت گردی کا کوئی سنگین واقعہ پیش نہیں آیا۔
اس سے پہلے وقفہ سوالات کے دوران خزانہ 'منصوبہ مندی اور ترقی کے وزیر سید مراد علی شاہ نے محکمہ منصوبہ بندی اورترقی کے بارے میں ایک سوال پر ایوان کو بتایا کہ سنگ مرمر کی صنعت کو فروغ دینے کے لئے مالی سال2012-13 میں ''ماربل سٹی'' کی سکیم کی منظوری دی گئی۔
ایوان کا اجلاس اب پیر کو صبح دس بجے ہوگا۔