دریائے چناب میں تریموں ہیڈورکس کے مقام پر انتہائی اونچے درجے کا سیلاب
11 ستمبر 2014 (21:26)
0

دریائے چناب میں تریموں ہیڈورکس کے مقام پر انتہائی اونچے درجے کا سیلاب ہے جہاں پانی کا بہاؤ پانچ لاکھ بانوے ہزار کیوسک سے زیادہ ہے۔ اس مقام پر پانی کی سطح جوں کی توں ہے۔ سیلاب کی اطلاع دینے والے لاہور مرکز نے آج (جمعرات) تیسرے پہر بتایا کہ کل سے پیر تک پنجند ہیڈورکس سے تقریبا چھ لاکھ کیوسک کے بڑے سیلابی ریلے کے گزرنے کا خدشہ ہے۔توقع ہے کہ دریائے چناب کا انتہائی اونچے درجے کا سیلاب آج رات جنوبی پنجاب میں داخل ہو گا اور آئندہ چوبیس سے چھتیس گھنٹے کے دوران ضلع خانیوال ، ملتان اور مظفرگڑھ سے گزرے گا۔


سیلابی پانی ان تین ضلعوں کے تین سو گاوؤں میں پھیل چکا ہے۔ ڈی سی او ملتان زاہد سلیم گوندل نے ہمارے ملتان کے نمائندے کو بتایا کہ ملتان شہر کو کوئی خطرہ نہیں ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہیڈمحمد والا برج آٹھ لاکھ کیوسک پانی کا دباؤ برداشت کر سکتا ہے اور اس پل کو بھی کوئی خطرہ نہیں ہے۔ اس وقت اس مقام پر نچلے درجے کا سیلاب ہے اور پانی کی سطح بلند ہو رہی ہے۔


دریائے راوی میں بلوکی کے مقام پر نچلے درجے کا سیلاب ہے اور پانی کی سطح کم ہو رہی ہے یہاں پانی کا بہاؤ چھپن ہزار دو سو پندرہ کیوسک اور پانی کا اخراج اکتالیس ہزار نو سو پندرہ کیوسک ہے۔ پنجاب میں دوسرے تمام دریا اور نالے اپنے اپنے ہیڈورکس پر معمول کے مطابق بہہ رہے ہیں۔

 

دریائے سندھ میں گڈو اور سکھر کے مقام پر آئندہ پیر سے بدھ تک انتہائی اونچے درجے کا سیلاب ہوگا۔ لاہور کے سیلاب کی پیش گوئی کرنے والے مرکز کے مطابق پیر اور منگل کو گڈو بیراج سے 6 سے7 لاکھ کیوسک پانی گزرنے کا امکان ہے۔ رحیم یار خان، راجن پور، جیکب آباد، گھوٹکی، شکارپور اور سکھر کے اضلاع زیر آب آنے کا امکان ہے۔ تمام متعلقہ حکام کو کہا گیا ہے کہ وہ کسی بھی جانی مالی نقصان سے بچائو کیلئے تمام ممکن اقدامات کریں۔

منگلا ڈیم پانی جمع کرنے کی ایک ہزار دو سو بیالیس فٹ کی انتہائی سطح پر پہنچ گیا ہے۔ تربیلا میں پانی کی سطح ایک ہزار پانچ سو بیالیس فٹ ہے جو اسکی انتہائی سطح سے ایک ہزار دو سو پچاس فٹ کم ہے۔

وزیراعلیٰ پنجاب میاں شہباز شریف نے آج ضلع مظفر گڑھ میں ہیڈ محمد والا میں فلڈ ریلیف کیمپ کا دورہ کیا۔ متاثرین سیلاب سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ حکومت سیلاب زدگان کی ہرممکن مدد کرے گی اور انہیں خیمے ، خوراک اور ادویات فراہم کی جائیں گی۔

پنجاب کابینہ کی فلڈ ریلیف کمیٹی کے چیئرمین شجاع خانزادہ نے کہا ہے کہ حکومت پنجاب عیدالاضحٰی سے پہلے سیلاب سے متاثرہ ہر خاندان کو بیس ہزار روپے دے گی۔ وہ آج کمیٹی کے ارکان کے ساتھ لاہور میں ایک نیوز کانفرنس سے خطاب کر رہے تھے۔ کمیٹی کے چیئرمین نے کہا کہ صوبائی حکومت متاثرین کی ان کے علاقوں میں مکمل بحالی تک چین سے نہیں بیٹھے گی۔ انہوں نے کہا کہ سیلاب میں پھنسے ہوئے افراد کو نکالنے کے لئے سولہ ہیلی کاپٹر استعمال کئے جا رہے ہیں۔


پنجاب کے وزیر خوراک بلال یاسین نے کہا کہ سیلاب زدگان میں بیس ہزار کمبل اور پانی کی ایک لاکھ بوتلیں تقسیم کی گئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ متاثرین کو ڈینگی بخار سے بچانے کے لئے مچھردانیاں بھی دی جائیں گی۔