سیکرٹری خارجہ نے کہا کہ گزشتہ دو ماہ کے دوران کنٹرول لائن اور ورکنگ بائونڈری پر خواتین اور بچوں سمیت چھبیس شہری شہید اور ایک سو سات زخمی ہوچکے ہیں۔

 بھارت کی جنگ بندی خلاف ورزیاں، پاکستان کا اظہار تشویش
11 نومبر 2016 (18:24)
0

پاکستان نے گزشتہ دو ماہ کے دوران کنٹرول لائن اور ورکنگ بائونڈری پر بھارتی قابض فورسز کی طرف سے مسلسل بلا اشتعال فائرنگ اور جنگ بندی کی خلاف ورزیوں پر شدید تشویش ظاہر کی ہے۔ 

سیکرٹری خارجہ اعزاز احمد چوہدری نے جمعہ کے روز اقوامِ متحدہ کی سلامتی کونسل کے مستقل ارکان کے مشن کے سربراہوں کو بریفنگ میں کہا کہ گزشتہ دو ماہ کے دوران کنٹرول لائن اور ورکنگ بائونڈری پر خواتین اور بچوں سمیت چھبیس شہری شہید اور ایک سو سات زخمی ہوچکے ہیں۔
یہ اقدامات دو ہزار تین میں کیے گئے معاہدے اور بین الاقوامی قانون کی مکمل خلاف ورزی ہیں۔
انہوں نے کہا کہ بھارت سوچے سمجھے منصوبے کے تحت کنٹرول لائن پر واقع دیہات اور شہری آبادی پر جان بوجھ کر اندھا دھند گولہ باری کر رہا ہے ۔
سیکرٹریک خارجہ نے منگل کے روز کنٹرول لائن کے سیکٹرز شاہ کوٹ اور جُوڑا میں توپخانے کے استعمال کی مذمت کی۔
انہوں نے کہا کہ پاکستان نے ہر ممکن صبر و تحمل کا مظاہرہ کیا تاہم اسے جوابی کاروائی پر مجبور کیا گیا اور پاک فوج نے بھارت کو منہ توڑ جواب دیا ۔
انہوں نے کہا کہ بھارتی اقدامات سے امن و سلامتی شدید خطرے میں ہے اور بھارت کو ہماری سٹرٹیجک اور ایٹمی صلاحیت کا درست اندازہ نہیں۔
سیکرٹری خارجہ نے پاکستان اور بھارت میں اقوام متحدہ کے فوجی مبصر گروپ کے اہم کردار پر زور دیتے ہوئے کہا کہ پاکستان گروپ تک رسائی فراہم کر رہا ہے اور اس سے مکمل تعاون کر رہا ہے ۔ تاہم بھارت اس سے گریزاں ہے اور ان کی رسائی محدود کر رہا ہے ۔ کنٹرول لائن اور ورکنگ بائونڈری پر امن و امان قائم رکھنا گروپ کی ذمہ داری ہے۔
مشنز کے سربراہوں نے یقین دلایا کہ وہ اپنے ملکوں کو پاکستان کی تشویش سے آگاہ کریں گے ۔
انہوں نے مسائل کے حل کے لیے صبر و تحمل ، بردباری ، جنگ بندی کی پاسداری اور مذاکراتی عمل شروع کرنے کی ضرورت پر زور دیا۔