نواز شریف نے امید ظاہر کی کہ دونوں ممالک کے درمیان دو طرفہ تجارت میں آئندہ برس کئی گنا اضافہ ہوگا۔


 

11 مارچ 2014 (14:48)
0

 وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان برطانیہ کے ساتھ معیشت اور تجارت سمیت مختلف شعبوں میں تعلقات کو فرو غ دینا چاہتاہے  ۔ وہ( آج )منگل کو ایوان وزیراعظم میں برطانوی ہائی کمشنر فلپ بارٹن سے  ملاقات کے دوران گفتگوکر رہے تھے ۔


 


وزیراعظم نے فلپ بارٹن کو پاکستان میں نئی ذمہ داری سنبھالنے پرمبارکباد دیتے ہوئے امید ظاہرکی کہ ان کی مدت کے دوران پاکستان اور برطانیہ کے درمیان دو طرفہ تعلقات مزید مستحکم ہونگے۔ وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان برطانیہ کو اپنا قریبی دوست اورحقیقی ترقیاتی شراکت دار سمجھتا ہے۔


 


انہوں نے کہا کہ دونوں ممالک کے درمیان دو طرفہ تجارت جو اس وقت2.99 ارب ڈالرہے،اس میں آئندہ برس کئی گنا اضافہ ہوگا۔ انہوں نے اس خواہش کا اظہارکیا کہ ہم وزیراعظم ڈیوڈ کیمرون کی طرف سے سال 2015 ء تک مقرر کردہ دو طرفہ تجارت کا 3ارب پائونڈ کا ہدف حاصل کرسکتے ہیں۔ انہوں نے جی ایس پی پلس سکیم میں شمولیت کیلئے برطانیہ کی حمایت اور کردار کو سراہا۔ وزیراعظم نے بتایا کہ پاکستان سرمایہ کاری دوست پالیسیوں پرعمل پیرا ہے ۔ توقع ہے کہ پاکستان میں برطانوی سرمایہ کاری مستقبل قریب میں بڑھے گی ۔ وزیراعظم نے کہا کہ ہمیں موجودہ براہ راست غیرملکی سرمایہ کاری میں اضافہ کیلئے مل کر کام کرنے کی ضرورت ہے کیونکہ توانائی ، بنیادی ڈھانچے کی ترقی ، زراعت اور زراعت پرمبنی صنعت اورکان کنی کے شعبوں میں توسیع کی بہت زیادہ گنجائش ہے۔


 


 


اس موقع پر وزیراعظم نے فلپ بارٹن کے پیش رو ایڈم تھامسن کی خدمات کو بھی سراہا۔ برطانیہ کے نئے ہائی کمشنر نے ملاقات کا موقع فراہم کرنے پر وزیراعظم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے اس اعتماد کا اظہارکیا کہ وہ اپنی سفارتی مدت کے دوران پاک برطانیہ تعلقات کو مزید فروغ دیں گے۔ وزیراعظم کے معاون خصوصی طارق فاطمی بھی ملاقات میں موجود تھے۔