خواجہ آصف نے کہا کہ مجوزہ اتحاد کسی بھی ملک، مذہب یا فرقے کے بجائے خالصتاً دہشتگردی کے خلاف ہے۔

پاکستان کسی بھی مسلمان ملک کیخلاف جنگ کا حصہ نہیں بنے گا،وزیر دفاع
11 اپریل 2017 (19:24)
0

خواجہ آصف مجوزہ اتحاد کسی بھی ملک ، مذہب یا فرقے کے بجائے خالصتاً دہشتگردی کے خلاف ہے۔
وزیردفاع خواجہ محمد آصف نے دوٹوک الفاظ میں کہا ہے کہ پاکستان کبھی بھی کسی بھی مسلمان ملک کے خلاف جنگ کا حصہ نہیں بنے گا۔
وہ حال ہی میں ریٹائرڈ ہونے والے آرمی چیف کو دہشتگردی کے خلاف جنگ کیلئے سعودی عرب کے زیر قیادت کثیر الملکی اسلامی فوجی اتحاد میں شمولیت کیلئے حکومت کی اجازت ملنے سے متعلق فرحت اللہ بابر کے پیش کردہ توجہ دلائو نوٹس کا جواب دے رہے تھے۔
وزیر دفاع نے کہا کہ پاکستان سعودی عرب کی سلامتی اور سالمیت کیلئے پرعزم ہے تاہم وہ یمن یا کسی دوسرے مسلمان ملک کے خلاف کسی بھی کارروائی کا حصہ نہیں بنے گا۔
انہوں نے کہا کہ مجوزہ اتحاد کسی بھی ملک ، مذہب یا فرقے کے بجائے خالصتاً دہشتگردی کے خلاف ہے۔
انہوں نے کہا کہ اگر کوئی بھی ریٹائرڈ فوجی افسر اپنی ریٹائرمنٹ کے دو سال کے اندر کسی بھی ملازمت کی پیشکش قبول کرنا چاہتا ہے تو اسے عدم اعتراض کا سرٹیفکیٹ درکار ہوتا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ریٹائرڈ جنرل راحیل شریف نے ابھی تک عدم اعتراض کے سرٹیفکیٹ کیلئے درخواست نہیں دی ہے۔
بھارتی را ایجنسی کے ایجنٹ کلبھوشن یادیو کو سزائے موت کے فیصلے پر تبصرہ کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ بھارتی جاسوس کے مقدمے کے دوران تمام قواعد وضوابط اور ملکی قانون کی پیروی کی گئی ہے جو تین ماہ سے زیادہ عرصے تک جاری رہا تھا۔
وزیر دفاع نے کہا کہ کلبھوشن یادیو قانون کے تحت رحم کی اپیل جیسے تمام قانونی راستے استعمال کرسکتاہے۔
انہوں نے کہا کہ بھارت پاکستان میں عدم استحکام پیدا کرنے اور دہشت گردی کوہوا دینے میں ملوث ہے۔
انہوں نے کہا کہ ملک کے دشمنوں کو یہ بات واضح طور پر معلوم ہونی چاہیے کہ ہماری بہادر مسلح افواج اور عوام ہر قیمت پر مادر وطن کے دفاع کے لئے پرعزم ہے۔


comments powered by Disqus