Tuesday, 11 December 2018, 12:46:03 am
بھارت کو اسلحہ فراہم کرنیوالے ممالک یقینی بنائیں کہ انکی معاونت سے خطے میں طاقت کا توازن نہیں بگڑے گا،دفتر خارجہ
October 11, 2018

 پاکستان نے واضح طور پر کہا ہے کہ وہ خطے میں اسلحہ کی دوڑ کے خلاف ہے۔ یہ بات دفترخارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نے جمعرات کے روز اسلام آباد میں اپنی ہفتہ وار نیوز بریفنگ کے دوران بھارت اور روس کے درمیان فضائی دفاعی نظام کے حالیہ معاہدے پر تبصرہ کرتے ہوئے کہی۔ترجمان نے کہا کہ بھارت کواسلحہ فراہم کرنے والے ملکوں کویہ بات یقینی بنانا چاہیے کہ ان کے اس اقدام سے خطے میں طاقت کا توازن متاثر نہ ہو۔تاہم ترجمان نے واضح کیا کہ پاکستانی قوم اور مسلح افواج کسی بھی جارحیت کاجواب دینے کیلئے مکمل طور پر تیارہیں۔ ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ پاکستان کوبھارت کے ساتھ بات چیت میں کوئی ہچکچاہٹ نہیں ہے اور وہ جموں و کشمیر، سرکریک ، سیاچن اور دہشت گردی سمیت تمام مسائل پر بات چیت کیلئے تیار ہے۔ترجمان نے کہا کہ موجودہ حکومت کے برسراقتدار آنے کے بعد امریکہ کے ساتھ روابط کو فروغ حاصل ہوا ہے۔ترجمان نے امریکہ کے نمائندہ خصوصی زلمے خلیل زاد کے ساتھ حالیہ بات چیت کے حوالے سے کہا کہ پاکستان نے امریکہ سے کہاہے کہ وہ افغانستان میں تنازع کے سیاسی حل میں تعاون کیلئے نیک نیتی سے تمام ممکنہ اقدامات کریگا۔تاہم انہوں نے کہا کہ امریکہ اور افغان حکومت اور دوسرے علاقائی فریقوں کی یہ مشترکہ ذمہ داری ہے کہ وہ اس سلسلے میں اپنا کردار ادا کریں۔ایک سوال کے جواب میں ترجمان نے کہا کہ پاکستان اور چین خصوصی اقتصادی زونز سمیت اقتصادی راہداری کے بعض منصوبوں میں تیسرے فریق کی سرمایہ کاری کیلئے تیار ہیں۔ایک اور سوال کے جواب میں ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ پاکستان میں بین الاقوامی غیر سرکاری تنظیموں پر کوئی پابندی نہیں ہے۔ترجمان نے کہا کہ پاکستان میں ذرائع ابلاغ پر بھی کوئی پابندی نہیں اور یہاں ذرائع ابلاغ کے ادارے آزادانہ کام کررہے ہیں۔