Sunday, 15 September 2019, 11:13:54 pm
وزیراعظم کا دورہ واشنگٹن،پاک امریکہ دیرینہ تعلقات مضبوط بنانے میں مدد ملے گی،دفتر خارجہ
July 11, 2019

وزیراعظم عمران خان اور امریکہ کے صدر ڈونلڈ ٹرمپ اس ماہ کی بائیس تاریخ کو وائٹ ہائوس میں دوطرفہ اور علاقائی امور پر تفصیلی بات چیت کریں گے۔دفتر خارجہ کے ترجمان ڈاکٹر محمد فیصل نےجمعرات کے روز اسلام آباد میں ہفتہ وار نیوز بریفنگ میں کہا کہ وزیراعظم عمران خان کے تین روزہ دورے سے پاکستان اور امریکہ کے درمیان دیرینہ تعلقات کی تجدید اور انہیںمضبوط بنانے میں مدد ملے گی۔ انہوں نے کہا کہ یہ دورہ دونوں ملکوں کے درمیان باہمی مفاد اور باہمی دلچسپی کی بنیاد پر وسیع تر طویل المدتی اور پائیدارشراکت داری کے قیام میں بھی معاون ثابت ہوگا۔ترجمان نے کہاکہ پاکستان اور بھارت کے درمیان ایک اجلاس اتوار کو ہوگا جس میں کرتارپور راہداری کے طریقہ کار کو حتمی شکل دینے سے متعلق معاہدے کے مسودے پر غور کیا جائے گا۔ بھارتی وفد بات چیت کیلئے پاکستان آئے گا جو واہگہ میں ہوگی۔انہوں نے کہاکہ کرتار پور راہداری کے بارے میں پہلا اجلاس چودہ مارچ کو ہوا تھا جبکہ دو اپریل کو مجوزہ اجلاس نہیں ہوسکا تھا۔ترجمان نے کہا کہ عالمی عدالت انصاف کلبھوشن یادیو کے مقدمے کا فیصلہ اس ماہ کی سترہ تاریخ کو سنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ ہم فیصلے کے بارے میں کوئی قیاس آرائی نہیں کرسکتے تاہم پاکستان نے عالمی عدالت انصاف میں یہ مقدمہ بھرپور انداز میں لڑا ہے۔مقبوضہ کشمیر میں بھارتی مظالم کے حوالے سے دفترخارجہ کے ترجمان نے کہا کہ پاکستان نے اقوام متحدہ کے انسانی حقوق کے ہائی کمشنر کی دوسری رپورٹ کا خیرمقدم کیا ہے جس میں مقبوضہ وادی میں انسانی حقوق کی سنگین خلاف ورزیوں کا ایک بار پھر اعتراف کیا گیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ ہم مقبوضہ علاقے میں حقائق جاننے کا مشن بھیجنے سے متعلق عالمی ادارے کی سفارش کا بھی خیرمقدم کرتے ہیں۔ دوحہ مذاکرات سے متعلق ایک سوال کے جواب میں ڈاکٹر محمد فیصل نے کہا کہ ان میں پاکستان کے بطور سہولت کار کردار کا اعتراف کیاگیا اور اسے سراہا گیا ہے ، انہوں نے کہاکہ ہم افغانوں کے زیر سرپرستی افغان تنازعے کے حل پر یقین رکھتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان افغانستان میں امن و استحکام کیلئے عالمی کوششوں میں تعاون جاری رکھے گا۔ ایران کے ایٹمی معاہدے سے متعلق سوال کے جواب میں ترجمان نے امید ظاہر کی کہ معاہدے کے تمام فریق معاہدے کی مکمل پاسداری اور مذاکرات کے ذریعے تصفیہ طلب مسائل کے حل کیلئے موثر اقدامات کریں گے۔ ترجمان نے کہا کہ پاکستان شمالی کوریا سے متعلق اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قرار داد پر مکمل طورپر عمل پیرا ہے۔ انہوں نے دو ٹوک الفاظ میں کہا کہ شمالی کوریا کے کسی باشندے کو ورک ویزہ جاری نہیں کیاگیا۔