Sunday, 15 September 2019, 10:57:26 pm
حریت قیادت کی مسئلہ کشمیر کے منصفانہ حل کیلئے یوم شہدائے کشمیر کے موقع پر مکمل ہڑتال کی اپیل
July 11, 2019

فائل فوٹو۔

مقبوضہ کشمیر میں مشترکہ حریت قیادت نے ہفتہ کو یو م شہدائے کشمیر کے موقع پر مکمل ہڑتال کی اپیل کی ہے جس کا مقصد کشمیریوںکی خواہشات کے مطابق مسئلہ کشمیر کے پر امن اور منصفانہ حل کی فوری ضرورت پر زوردینا ہے۔مشترکہ حریت قیادت نے سرینگر میںایک بیان میں13 جولائی 1931کے شہداء کو خراج عقیدت پیش کرنے کیلئے اس روز مزار شہداء نقشبند صاحب سرینگر کی طرف مارچ کی بھی اپیل کی ہے میر واعظ عمر فاروق نماز ظہر کے بعد جامع مسجد سرینگر سے مزار شہداء تک ایک مارچ کی قیادت کرینگے ہڑتال کا مقصد کشمیری عوام اور حریت رہنمائوں کیخلاف مظالم کا سلسلہ بندکرانے پر زوردینا بھی ہے۔13 جولائی 1931کوڈوگرہ مہاراجہ ہری سنگھ کے فوجیوں نے سرینگر سینٹرل جیل کے باہر یکے بعد دیگرے 22کشمیریوں کو گولیاں مار کر شہید کردیا تھا۔ اس روز ہزاروںکشمیری عبدالقدیر نامی ایک شخص کے خلاف مقدمے کی سماعت کے موقع پر اس کے ساتھ اظہار یکجہتی کے لیے جیل کے باہر جمع ہوئے تھے ، جس نے کشمیریوں کو ڈوگرہ راج کے خلاف اٹھ کھڑے ہونے کیلئے کہاتھا ۔جموںوکشمیر لبریشن فرنٹ نے دنیا بھر میں ''یاسین ملک کو رہا کر و''اور''لبریشن فرنٹ سے پابندی ہٹائو''مہم کا آغازکرنے کا فیصلہ کیا ہے۔ لبریشن فرنٹ کی طرف سے سرینگر میںپارٹی کی سپریم کونسل کے اجلاس کے بعدجاری ایک بیان میں کہاگیا ہے کہ یہ فیصلہ کونسل کے اجلاس میں کیاگیا۔ادھرعالمی کرکٹ کپ کے سیمی فائنل میں گزشتہ رات نیوزی لینڈ کے ہاتھوں بھارت کی شکست پر مقبوضہ کشمیر میں لوگوں میں خوشی کی لہر دوڑ گئی نیوزی لینڈ کی طرف سے عالمی کرکٹ کپ جیتنے کا بھارتی خواب چکنا چور ہونے پر سرینگر کے رہائشیوں نے زبردست خوشی کا اظہار کرتے ہوئے سڑکوں پر آکر جشن منایا ۔ انہوں نے آزادی اور پاکستان کے حق میں اور بھارت کے خلاف نعرے لگائے۔ نیویاک میں قائم تنظیم '' کمیٹی ٹو پروٹیکٹ جرنلسٹس'' نے ایک بیان میں بھارتی حکام پر زور دیا کہ وہ سرینگر سے شائع ہونے والے انگریزی روزنامے ''گریٹر کشمیر'' سے وابستہ صحافیوں اور دیگر ملازمین کو ہراساں کرنے کا سلسلہ بند کریں۔