مشیر خارجہ نے کہا ہے کہ وزیرستان میں دہشت گردوں کے ٹھکانے تباہ کردئیے گئے ہیں۔

افغانستان سرحد پر دہشت گردوں کی نقل و حرکت روکے:پاکستان
10 مئی 2017 (15:17)
0

پاکستان نے افغانستان پرزور دیا ہے کہ وہ سرحد پر دہشت گردوں کی نقل و حرکت روکے ۔مشیر خارجہ سرتاج عزیز نے یہ مطالبہ اسلام آباد میں ایک سیمینار سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔مشیر خارجہ نے افغان حکام سے یہ بھی کہا کہ وہ افغانستان کی سرزمین پرسرگرم کالعدم تحریک طالبان پاکستان کیخلاف کارروائی کرے۔
سرتاج عزیز نے کہا کہ دہشت گرد عناصر کی باقیات کے خاتمے کیلئے آپریشن ردالفساد شروع کیاگیا ہے۔انہوں نے کہا کہ وزیرستان میں دہشت گردوں کے ٹھکانے تباہ کردئیے گئے ہیں۔مشیر خارجہ نے کہا کہ پاکستان نے افغانستان میں امن و استحکام کیلئے ہمیشہ مخلصانہ کوششیں کی ہیں،ا نہوں نے اس بات پر زور دیا کہ صرف سیاسی حل ہی ہمسایہ ملک میں پائیدار امن کے لئے راہ ہموار کرسکتا ہے ،انہوں نے کہا کہ افغانستان میں امن پاکستان کے امن و استحکام کے لئے ناگزیر ہے۔
مشیر خارجہ نے کہا کہ چمن کے مقام پر پاک افغان سرحدجزوی طور پر کھول دی گئی ہے انہوں نے کہا کہ پہلے مرحلے میں علیل افغان باشندوں کو اپنے گھروں کو واپس جانے کی اجازت دی جارہی ہے۔سرتاج عزیز نے کہا کہ ایران اور افغانستان دشمن نہیں دوست ملک ہیں۔

بعد میں صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے سرتاج عزیز نے کہا کہ سرحد سے متعلق مسائل کے حل کیلئے پاکستان اور ایران دونوں نے ایک نیا سرحدی انتظامی کمیشن تشکیل دینے پر اتفاق کیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہمارا مقصد سرحدی انتظام کو اس انداز میں مزید مستحکم بنانا ہے کہ سلامتی سے متعلق کوئی خلا پیدا نہ ہو۔
شنگھائی تعاون تنظیم کے آئندہ سربراہ اجلاس کے موقع پر بھارت اور پاکستان کے وزرائے اعظم کے درمیان کسی ملاقات کے امکان کے بارے میں مشیر خارجہ نے کہا کہ اس بارے میںکوئی بات کہنا ابھی قبل از وقت ہوگا، انہوںنے کہا کہ پاکستان ایسی ملاقات پر غور کرسکتا ہے اگر دوسری جانب سے بھی دلچسپی ظاہر کی گئی۔
تاہم انہوں نے کہا کہ شنگھائی تعاون تنظیم کاسربراہ اجلاس ایک اہم موقع ہے کیونکہ پاکستان تنظیم کا مستقل رکن بن جائے گا۔