یوم دستور کے موقع پر مذاکرے میں حصہ لیتے ہوئے سینیٹرز نے کہا کہ ملکی ترقی ،خوشحالی کیلئے آئین کی بالادستی ناگزیر ہے۔

آئین کا تحفظ ہم سب کی ذمہ داری ہے،سینیٹرز
10 اپریل 2017 (19:38)
0

سینیٹر نے کہا ہے کہ ملک کی ترقی اور خوشحالی کیلئے آئین کی بالادستی ناگزیر ہے اور آئین کا تحفظ ہم سب کی ذمہ داری ہے۔
انہوں نے یہ بات پیر کے روز یوم دستور کے موقع پر ایک مذاکرے میں حصہ لیتے ہوئے کہی۔
محمد عثمان خان کاکڑ نے بحث کا آغاز کرتے ہوئے سینیٹ اور چیئرمین کو یوم دستور منانے پر مبارکباد دی۔
فرحت اللہ بابر نے کہا کہ آئین بالادست ہے اور اس کا احترام کیا جانا چاہئے کیونکہ کوئی بھی اس سے بالاتر نہیں ہے۔
سردار عظم خان موسیٰ خیل نے کہا کہ قومی وسائل کو تمام وفاقی اکائیوں میں یکسان تقسیم کیا جانا چاہئے۔
جہانزیب جمالدینی نے آئین کی اصل روح کے مطابق اس پر عملدرآمد کرانے کی ضرورت پر زور دیا۔
اعظم خان سواتی نے کہا کہ آئین اس وقت کی قیادت کی جرات اور بصیرت کی عکاسی کرتا ہے۔
سید طاہر حسین مشہدی نے کہا کہ پاکستان کے آئین کا شمار دنیا کے بہترین دساتیر میں ہوتا ہے۔
محمد جاوید عباسی نے کہا کہ اس دن کو اس عزم کے ساتھ منانا چاہئے کہ کسی کو آئین کی خلاف ورزی کی اجازت نہیں دی جائے گی۔


تاج حیدر نے کہا کہ آئین اس وقت کی تمام سیاسی قوتوں کے اتفاق رائے سے منظور کیا گیا اور اس سلسلے میں شاندار لچک کا مظاہرہ کیا گیا۔
چوہدری تنویر خان نے کہا کہ پاکستان کا آئین اسلامی ہے کیونکہ اس میں اسلامی تعلیمات کے منافی کوئی شق شامل نہیں۔
مولانا تنویرالحق تھانوی نے کہا کہ آئین پاکستان کی تخلیق میں تمام مسالک کے علمائے کرام شامل تھے۔
کلثوم پروین نے کہا کہ پاکستان کا آئین معاشرے کے تمام طبقوں کے حقوق کا تحفظ کرتا ہے۔
سید مظفر حسین شاہ نے کہا کہ آئین عوام اور حکومت کے درمیان ایک سماجی معاہدے کی حیثیت رکھتا ہے۔
اشوک کمار نے کہا کہ آئین ہماری مقدس دستاویز ہے اور کسی کو اس کی خلاف ورزی نہیں کرنی چاہئے۔
چیئرمین نے اپنے ریمارکس میں یوم دستور منانے پر صدر، وزیراعظم ، قومی اسمبلی اور تمام صوبائی اسمبلیوں کا شکریہ ادا کیا۔


comments powered by Disqus