Monday, 25 May 2020, 11:47:26 am
وفاقی کابینہ کاوزیراعظم کےوژن کے تحت عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولیات فراہمی کیلئے مختلف تجاویز پرغور
December 11, 2019

وفاقی کابینہ نے وزیراعظم عمران خان کے ویژن کے تحت عوام کو زیادہ سے زیادہ سہولتیں فراہم کرنے کی غرض سے رکاوٹیں دور کرنے کے لئے مختلف تجاویز پر غور کیا ہے۔

منگل کی سہ پہر اسلام آباد میں کابینہ اجلاس کے بارے میں صحافیوں کو بریفنگ دیتے ہوئے اطلاعات و نشریات کی معاون خصوصی ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ اجلاس میں حکومت کی پندرہ ماہ کی کارکردگی کا جائزہ لیا گیا۔

اجلاس میں عوام کے لئے سہولتیں فراہم کرنے سے متعلق اقدامات، عوامی مفاد کی قانون سازی اور گیس اور بجلی کی قیمتوں میں اعانت کی فراہمی سمیت حکومت کے مختلف اقدامات پر بھی غور کیا گیا۔

ڈاکٹر فردوس عاشق اعوان نے کہا کہ وزیراعظم کو پانی و بجلی کی وزارت اور تیل و گیس کی وزارت کی جانب سے تفصیلی بریفنگ دی گئی۔ وزیراعظم کو بتایا گیا کہ کس طرح گردشی قرضہ کم کر کےماہانہ 12 ارب روپے تک لایا گیا۔

کابینہ کو یہ بھی بتایا گیا کہ جو صارفین بجلی کے 300 سے کم یونٹ استعمال کر رہے ہیں انہیں 242 ارب روپے کی اعانت دی گئی ہے۔

وزارت تیل و گیس نے اپنی بریفنگ میں کابینہ کو بتایا کہ اسے 181 ارب روپے کا نقصان ورثے میں ملا جس پر قابو پا لیا گیا ہے بریفنگ میں کہا گیا کہ کاشتکاروں کو دس ارب روپے اعانت دی گئی جبکہ اعانت میں آئندہ سال کے لئے 30 ارب روپے کی رقم مختص کی گئی ہے۔

وزیراعظم نے تیل و گیس کی وزارت کو ہدایت کی کہ گھریلو صارفین کو گیس کی بلاتعطل فراہمی یقینی بنائیں۔

انہوں نے سوئی سدرن اور سوئی ناردرن گیس کمپنیوں میں خودکار نظام کے ساتھ ساتھ اصلاحات متعارف کرانے کی ہدایت کی۔

بلوں کے لئے بھی ایک نظام وضع کیا جانا چاہئے تاکہ سردی کے مہینوں میں صارفین پر گیس کے اضافی بلوں کا بوجھ نہ پڑے۔

کابینہ نے سکوک بانڈز کے اجراء پر تحفظات کا اظہار کیا۔ وزیراعظم نے وزارت خزانہ کو ہدایت کی کہ اس معاملے پر نظرثانی کر کے اسے آئندہ اجلاس میں دوبارہ پیش کیا جائے۔وزیراعظم نے وفاقی دارالحکومت میں ہسپتالوں اور صحت کے مراکز میں جدید آلات اور سہولتیں فراہم کرنے کی ہدایت کی۔عمران خان نے وزارت قانون کو ہدایت کی کہ چینی، آٹے اور دیگر اجناس کا کاروبار کرنے والے اداروں کو ان مقدمات کی نشاندہی کی جائے جنہوں نے عوامی مفاد کی قیمت پر عدالتوں سے ریلیف حاصل کیا۔ڈاکٹر عشرت حسین کی سربراہی ایک کمیٹی بھی قائم کی گئی جو صوبوں کی مشاورت سے خوراک کے قوانین کے بارے میں ایک پالیسی وضع کرے گی۔کابینہ میں 1971ء کی جنگ کے ہیرو کرنل سلیمان کی وفات پر ان کے لئے دعائے مغفرت بھی کی گئی۔