Tuesday, 23 April 2019, 11:28:25 pm
حکومت ملک کو جدید خطوط پر ترقی دینے کیلئے اصلاحاتی ایجنڈے پر عمل پیرا ہے، وزیر اعظم
February 10, 2019

وزیراعظم نے کہا ہے کہ وہ پاکستان میں ریاست مدینہ کی طرح انصاف، انسانیت، میرٹ اور احتساب پر مبنی معاشرہ قائم کرنا چاہتے ہیں۔

دبئی میں حکومتوں کے عالمی سربراہ اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے عمران خان نے کہا کہ کوئی بھی ملک نظم و نسق بہتربنائے، احتساب یقینی اور بدعنوانی پر قابو پائے بغیر ترقی نہیں کر سکتا۔

وزیراعظم نے کہا کہ نبی کریم حضرت محمد مصطفیۖ نے قانون کی حکمرانی قائم کر کے اور علم کے حصول پر زور دے کر پہلی فلاحی ریاست کی بنیاد رکھی۔

انہوں نے کہا کہ چین نے تیس برس میں اپنی سترکروڑ آبادی کو غربت سے نکالا۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان تحریک انصاف کی حکومت عام آدمی کی فلاح و بہبود کیلئے ملک کے انسانی سرمائے پر سرمایہ کاری میں بھی یقین رکھتی ہے۔

عمران خان نے کہا کہ ہم کاروبار کرنے میں آسانی، ٹیکس قوانین میں تبدیلی اور سرمایہ کاری کی حوصلہ افزائی جیسے اصلاحاتی ایجنڈے پر عمل کر کے پاکستان کوجدید خطوط پر ترقی دے رہے ہیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان میں سیاحت کے شعبے میں وسیع مواقع ہیں اور حکومت اس شعبے پر توجہ دے رہی ہے۔

وزیراعظم نے سرمایہ کاروں کو پیشکش کی کہ وہ حکومت کی کاروبار دوست پالیسیوں سے فائدہ اٹھا کر پاکستان میں مختلف شعبوں میں سرمایہ کاری کریں۔

عمران خان نے کہا کہ ریاست مدینہ میں وعدہ کیا گیا کہ غیر مسلموں کی عبادت گاہوں کا تحفظ کیا جائے ، زبردستی مذہب تبدیل نہیں ہوگا اور انسانی حقوق کا احترام کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت ان اصولوں پر پاکستان کو ترقی دینا چاہتی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ احتساب، قانون کی حکمرانی اور غریبوں کی فلاح وبہبود ریاستی مشینری کی نمایاں خصوصیات ہونی چاہئیں۔

انہوں نے کہا کہ پاکستان کو آگے لے جانے کیلئے اصلاحات ضروری ہیں اور حکومت اس پر توجہ دے رہی ہے۔

انہوں نے کہا کہ ہم مالی خسارہ میں کمی اور برآمدات کے فروغ کیلئے اپنی معاشی پالیسیوں کو بہتر بنانے کی کوشش کررہے ہیں۔