نوازشریف نے کہاکہ بکھی بجلی گھر منصوبہ ملک میں توانائی بحران کے حل کیلئے ایک سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے ۔

وزیراعظم کا توانائی بحران 2018 ء تک حل کرنے کا عزم
09 اکتوبر 2015 (17:45)
0

وزیراعظم محمد نوازشریف نے کہا کہ ملک میں توانائی کا شدید بحران دو ہزارہ اٹھارہ تک ختم ہوجائے گا ۔

انہوں نے یہ بات جمعہ کے روز شیخوپورہ کے قریب بکھی 1180 میگاواٹ کے گیس سے چلنے والے بجلی گھر کی افتتاحی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کہی ۔
وزیراعظم نے کہاکہ نیپرا نے پچانوے ارب روپے سے یہ منصوبہ قائم کرنے کی منظوری دی تاہم پنجاب حکومت صرف پچپن ارب روپے میں دو ہزار سترہ تک یہ منصوبہ مکمل کرے گی ۔
انہوں نے کہاکہ بکھی بجلی گھر منصوبہ ملک میں توانائی بحران کے حل کیلئے ایک سنگ میل کی حیثیت رکھتا ہے ۔
انہوں نے کہاکہ حکومت ارزاں نرخوں پر بجلی پیدا کرنے کے اقدامات کررہی ہے ۔
انہوں نے کہاکہ اس مقصد کیلئے کام کرنا ضروری ہے کیونکہ محض دھرنوں کے دوران بجلی کے بل جلا کر بجلی پیدا نہیں کی جاسکتی ۔
وزیراعظم نے بجلی کے بحران کے حل کیلئے محنت اور دل جمعی سے کام کرنے پر پنجاب کے وزیراعلی محمد شہبازشریف اوران کی ٹیم کی تعریف کی ۔
نوازشریف نے کہاکہ وفاقی حکومت جھنگ کے علاقے حویلی بہادرشاہ اور بلوکی میں گیس سے چلنے والے مزید دو بجلی گھر قائم کررہی ہے جن میں سے ہرایک کی پیداواری صلاحیت بارہ سو میگاواٹ ہوگی ۔
انہوں نے کہاکہ حکومت کی کامیاب اقتصادی پالیسیوں کی بدولت ملک کے زرمبادلہ کے ذخائر نے گزشتہ تمام ریکارڈ توڑ دئیے ہیں ۔
انہوں نے کہاکہ پورٹ قاسم پربجلی کے مختلف منصوبے مکمل کے جارہے ہیں جبکہ بھاشا اور داشو ڈیموں اور نیلم جہلم منصوبوں سے بھی پن بجلی پیدا کی جائے گی ۔
انہوں نے کہاکہ ان تمام بجلی گھروں کی تکمیل سے مختلف شعبوں میں زیادہ سے زیادہ ملکی اور غیرملکی سرمایہ کاری راغب کرنے میں مدد ملے گی ۔
وزیراعظم نے کہاکہ پاکستان ترقی اور خوشحالی کی راہ پر گامزن ہے انہوں نے کہاکہ کر اچی لاہور موٹر وے کاکام دوہزاراٹھارہ تک مکمل کرلیاجائے گا ۔
اس سے پہلے وزیراعظم نے شیخوپورہ کے قریب ایک ہزار ایک سواسی میگاواٹ کے بھکی بجلی گھر کا سنگ بنیاد رکھا ۔
یہ منصوبہ پچپن ارب روپے کی لات سے دوہزار سترہ کے آخر تک مکمل کیاجائے گا ۔
یہ چین کی ہربن الیکٹرک انٹرنیشنل اور امریکی جنرل الیکٹرک کمپنی کا مشترکہ منصوبہ ہے ۔