صدر ممنون حسین نے حکومت کی اقتصادی پالیسیوں کو سراہا ۔

صدر،وزیر اعظم کا اقتصادی راہداری کی بروقت تکمیل کا عزم
09 نومبر 2016 (11:56)
0

صدر مملکت ممنون حسین اور وزیراعظم نوازشریف نے چین پاکستان اقتصادی راہداری کی خوش اسلوبی اور بروقت تکمیل کو یقینی بنانے کے اپنے عزم کا اظہار کیا ہے۔
بدھ کے روز اسلام آباد میں ملاقات کے دوران انہوں نے کہاکہ اس بڑے منصوبے سے نہ صرف ملک بلکہ خطے میں بے مثال اقتصادی خوشحالی آئے گی۔
انہوں نے واضح کیا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری سے ملک کے تمام علاقوں کو یکساں فائدہ ہوگا۔
انہوں نے امید ظاہر کی کہ 2018 تک توانائی کے منصوبوں کی تکمیل سے ملک لوڈ شیڈنگ سے نجات حاصل کرلے گا۔
دونوں رہنمائوں نے ملک کی مجموعی صورتحال پر بھی تبادلہ خیال کیا جس میں خصوصی طور پر معیشت، چین پاکستان اقتصادی راہداری اورتوانائی کے منصوبوں ،امن و امان ،کنٹرول لائن ،ورکنگ بائونڈری اورمقبوضہ کشمیر کی صورتحال پر تبادلہ خیا ل کیا۔
وزیراعظم نے صدر کو مختلف شعبوں میں حکومت کی پالیسیوں اوراقدامات کے بارے میں آگاہ کیا جن کامقصد ملک کو پائیدار ترقی کی راہ پر گامزن کرنا اور قومی معیشت کو مضبوط بناکر عوام کا معیار زندگی بلند کرنا ہے۔
صدر ممنون حسین نے حکومت کی اقتصادی پالیسیوں کو سراہا جن کی بدولت قومی معیشت بحال ہورہی ہے اورترقی کے فوائد عام آدمی تک منتقل ہورہے ہیں۔ انہوں نے عالمی مالیاتی اداروں کی طرف سے حکومت کی اقتصادی کامیابیوں اوراقتصادی اشاریوں میں بہتری پراعتماد کا اظہار کئے جانے پر اطمینان ظاہر کیا۔

دونوں رہنمائوں نے اس عزم کااعادہ کیا کہ حکومت ملک بھر میں اپنے اقتصادی ایجنڈے کو اولین ترجیح دیتی رہے گی اورمعاشرے کے تمام طبقوں پرزوردیا ہے کہ وہ تمام ترقیاتی منصوبوں کی بروقت تکمیل کے لئے حکومت کی حمایت کریں۔
صدر اوروزیراعظم نے ضرب عضب کے نتائج پر اطمینان کا اظہار کیا۔
انہوں نے اس عزم کا اظہار کیاکہ امن کے مکمل حصول تک شرپسندوں اور دہشت گردوں کیخلاف بلا امتیاز کارروائی جاری رہے گی۔
دونوں رہنمائوں نے علاقائی صورتحال کا جائزہ لیا اور پاکستان کی خطے میں امن و خوشحالی کیلئے تمام پڑوسی ملکوں کے ساتھ دوستانہ تعلقات برقراررکھنے کی خواہش کااظہار کیا۔
انہوںنے مقبوضہ کشمیر میں بے گناہ کشمیریوں کے خلاف جاری بھارتی مظالم اوربھارت کی جانب سے کنٹرول لائن کی مسلسل خلاف ورزی کی مذمت کی۔