نوازشریف نے اگلے5 سال کیلئے اچھی ہمسائیگی کے طویل مدتی معاہدے کی ضرورت کے بارے میں چین کے صدر کی تجویز کا خیرمقدم کیا۔

وزیراعظم کا مستقبل کی نسلوں کیلئے امن اور ہم آہنگی کا ورثہ چھوڑنے پرزور
09 جون 2017 (15:20)
0

وزیراعظم نوازشریف نے شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں پر مستقبل کی نسلوں کیلئے تنازعات اور عداوت کی زہریلی فصل بونے کے بجائے امن اور ہم آہنگی کا ورثہ چھوڑنے کی ضرورت پرزوردیا ہے ۔آج قازخستان کے شہر آستانہ میں شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں کی کونسل کے سربراہوں سے خطاب کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ ہمیں مخاصمت کے سدباب کرنے کے پالیسی کے بارے میں باتیں کرنے کے بجائے سب کیلئے مشترکہ گنجائش پیداکرنی چاہیے۔

وزیراعظم نے اگلے پانچ سال کیلئے اچھی ہمسائیگی کے طویل مدتی معاہدے کی ضرورت کے بارے میں چین کے صدر Xi Jinping کی تجویز کا خیرمقدم کیا۔
پاکستان کی تنظیم کی مستقل رکنیت کیلئے رکن ملکوں کے تعاون کا شکریہ ادا کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ تنظیم کامکمل رکن بنانا پاکستان کیلئے ایک تاریخی دن ہے ۔
شنگھائی تعاون تنظیم میں شامل ہونے پر بھارت کو مبارک باد دیتے ہوئے وزیراعظم نے کہاکہ یہ تنظیم ہمیں اعتمادسازی امن اور معاشی ترقی کیلئے ایک طاقتور پلیٹ فارم فراہم کرتی ہے انہوں نے کہاکہ تنظیم دہشت گردی کے خاتمے، اسلحہ کی دوڑ کم کرنے، غربت اور مہلک امراض کا مقابلہ کرنے، ماحولیاتی تبدیلی سے نمٹنے اور پانی کے تحفظ یقینی بنانے میں بھی مدد گار ہوگی ۔
دہشت گردی اور انتہاپسندی کے خاتمے کیلئے شنگھائی تعاون تنظیم کے عزم کی بھرپور توثیق کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہاکہ پاکستان نے بہادری کے ساتھ اس برائی کے خلاف جدوجہد کی ہے۔

ادھر شنگھائی تعاون تنظیم کے رکن ملکوں نے اپنے عوام کی فلاح وبہبود کیلئے مختلف شعبوں میں تعاون مزید مستحکم بنانے پر اتفاق کیا ہے ۔اس سلسلے میں آج قازخستان کے دارالحکومت آستانہ میں شنگھائی تعاون تنظیم کے سربراہ اجلاس کے اختتام پر تنظیم کے رکن ملکوں کے رہنمائوں نے ایک اعلامیے پر دستخط کیے ۔