بل میں دیگر امور کے علاوہ اسلام آباد میں بلدیاتی انتخابات جماعتی بنیادوں پر کرانے کی تجویز دی گئی ہے۔

سینٹ نے اسلام آباد کے مقامی حکومت بل 2015ء کی منظوری دے دی
09 جولائی 2015 (17:37)
0

سینٹ نے جمعرات کو وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان کی طرف سے پیش کردہ وفاقی دارالحکومت اسلام آباد کے مقامی حکومت بل 2015ء کی منظوری دے دی جس کا مقصد وفاقی دارالحکومت میں بلدیاتی نظام کو قانونی شکل دینا اوراس کی تشکیل نو کرنا ہے۔ یہ بل قومی اسمبلی میں اس حوالے سے پاس کئے گئے بل سے مختلف ہے۔  بل میں دیگر امور کے علاوہ اسلام آباد میں بلدیاتی انتخابات جماعتی بنیادوں پر کرانے کی تجویز دی گئی ہے۔

ایوان نے دوبلوں کی متفقہ طورپرمنظوری دی جن کے تحت وفاقی ملازمین کے BENEVOLENT فنڈ اور گروپ انشورنس ایکٹ 1969ء میں ترامیم کی گئی ہیں۔  پارلیمانی امور کے وزیر مملکت شیخ آفتاب احمد نے جنہوں نے بل پیش کیے واضح کیا کہ BENEVOLENT فنڈ اور گروپ انشورنس اسکیم میں ترامیم کے بعد انتقال کر جانے والے ریٹائرڈ ملازمین کی شریک حیات اور اہل خانہ ستر سال کی عمر کے بعد بھی استفادہ کرسکتے ہیں۔


وفات پانے والے ملازم کی عمر سے قطع نظر پندرہ سال تک یہ فوائد حاصل کرسکیںگے۔ ایوان نے کیپٹل یونیورسٹی آف سائنس اینڈ ٹیکنالوجی بل 2015 کی بھی منظوری دی۔  پارلیمانی امور کے وزیر مملکت شیخ آفتاب احمد نے بل کی منظوری کیلئے تحریک پیش کرتے ہوئے کہاکہ حکومت ہرضلعی ہیڈ کوارٹرمیں یونیورسٹیاں قائم کرے گی۔

سینٹ کواس سے پہلے بتایاگیا کہ فی کس آمدن میں اضافے کیلئے ویژن2025 کی صورت میں ایک جامع حکمت عملی وضع کی گئی ہے۔  وزیر پیٹرولیم شاہد خاقان عباسی نے وقفہ سوالات کے دوران ایوان کو بتایا کہ اس ویژن کے سات ستون ہیں جن میں انسانی اور سماجی سرمائے کافروغ، خود انحصاری پر مبنی، پائیدار ترقی کا حصول، بہتر نظم و نسق، ادارہ جاتی اصلاحات اور سرکاری شعبے کو جدید خطوط پر استوار کرنا شامل ہیں۔


انہوں نے کہا کہ این ایف سی ایوارڈ میں صوبوں کا حصہ بڑھایا گیاہے تاکہ وہ اپنے سماجی اور اقتصادی حالات بہتر کرسکیں انہوں نے کہا کہ پسماندہ علاقوں میں شروع کئے گئے منصوبوں کو وفاق کے سرکاری شعبے کے ترقیاتی پروگرام کے ذریعے بھی فنڈ فراہم کئے جارہے ہیں۔


ریاستوں اور سرحدی علاقوں کے وزیر عبدالقادر بلوچ نے ایوان کو بتایا کہ پاکستا ن میں تیرہ سو سی سی اور اس سے بڑی کاروں کی قیمتیں ہمسایہ ملکوں کے مقابلے میں کم ہیں پاکستان میں تیار ہونے والی یا اسمبل کی جانے والی چھوٹی کاروں کی قیمتیں زیادہ ہے۔  انہوں نے کہا کہ حکومت Automotive ڈویلپمنٹ پالیسی دوہزار پندرہ تا دوہزار بیس کا مسودہ تیار کررہی ہے جس کے تحت نئے سرمایہ کاروں کو مسابقتی عمل کے ذریعے قیمتیں کم کرنے کیلئے مناسب مراعات دی جائیں گی۔

وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان نے سینٹ کو یقین دلایا ہے کہ پاکستان کے مفادات اور اقدار کے خلاف کام کرنے والی غیرسکاری تنظیموں کو ملک میں کام کرنے کی اجازت نہیں دی جائے گی۔  حافظ حمد اﷲ کے توجہ دلائو نوٹس کا جواب دیتے ہوئے انہوں نے کہاکہ بین الاقوامی این جی اوز کی سرگرمیوں کوباضابطہ بنانے کیلئے ایک جامع اور شفاف نظام وضع کیا جارہا ہے۔
انہوں نے کہاکہ ایک آن لائن نظام ترتیب دیا جارہا ہے جس میں ملک میں کام کرنے والی این جی اوز کی سرگرمیوں ان کے فنڈز اوراخراجات کا تعین کیاجارہا ہے۔


وزیرداخلہ نے کہاکہ Save the children کا اسلام آباد میں واقع دفتر متعلقہ معاملات طے ہوجانے پر تین ہفتے تک سربمر رہنے کے بعد دوبارہ کھول دیاگیا ہے۔  

چوہدری نثار علی خان نے ایوان کو بتایا کہ افریقہ میں قائم دو بین الاقوامی این جی اوز بلوچستان اور گلگت بلتستان میں غیرقانونی سرگرمیوں میں ملوث تھیں ان کو امریکہ ، یورپی یونین، بھارت اور اسرائیل کی سرپرستی حاصل تھی۔  انہوں نے کہاکہ پاکستان نے اس معاملے کو اقوام متحدہ کی اقتصادی اور سماجی کونسل کے سامنے اٹھایا۔