نوازشریف نےعالمی بنک کےصدرسےملاقات میں کہاکہ ہماری کوششوں کا مقصد کاروبار کرنا نہیں بلکہ نہ صرف نجی بلکہ سرکاری شعبے کیلئے بھی کاروبار کے حوالے سے سازگار ماحول یقینی بنانا ہے۔

حکومت آزاداورنجی شعبےکی شراکت داری پرمبنی معیشت پریقین رکھتی ہے:وزیراعظم
09 فروری 2016 (14:48)
0

وزیراعظم نوازشریف نے عالمی بنک کے صدر ڈاکٹر جم یونگ کم سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ ان کی حکومت آزاد اور نجی شعبے کی شراکت داری پر مبنی معیشت پر یقین رکھتی ہے۔انہوں نے کہا کہ ہماری کوششوں کا مقصد کاروبار کرنا نہیں بلکہ نہ صرف نجی بلکہ سرکاری شعبے کیلئے بھی کاروبار کے حوالے سے سازگار ماحول یقینی بنانا ہے۔انہوں نے پاکستان کی معاشی ترقی میں عالمی بنک کے تعاون کو سراہا۔

نواز شریف نے کہا کہ حکومت معیشت کے ہر شعبے میں بہتری لانے کیلئے ہرممکن کوششیں کر رہی ہے ۔ انہوں نے اس بات پر زور دیا کہ داسو پن بجلی منصوبے اور تربیلا4 توسیعی منصوبے کیلئے عالمی بنک کا تعاون حکومت کیلئے توانائی کے شعبے میں بہتری لانے اور مہنگے تیل سے بجلی پیدا کرنے کا انحصار کم کرنے کیلئے معاون ثابت ہو گا۔عالمی بنک کے صدر نے حکومت کے مشکل اقتصادی فیصلوں کیلئے مکمل حمایت کا اظہار کیا اور کہا کہ عالمی بنک ڈھانچہ جاتی اصلاحات کے ایجنڈے کی تائید کرتا ہے۔


اس سے پہلے پاکستان کی معاشی کارکردگی کے بارے میں ایک اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے عالمی بنک کے صدر نے کہا کہ پاکستان نے اقتصادی استحکام کے حصول کی جانب نمایاں پیش رفت کی ہے۔انہوں نے کہا کہ حکومت کی طرف سے کئے گئے اقدامات کے باعث پاکستان آئندہ تیزی سے ترقی کرتی ہوئی کامیاب معیشت بننے کی صلاحیت رکھتا ہے۔انہوں نے کہا کہ عالمی بنک حکومت پاکستان کے معیشت کو مضبوط بنانے کے اقدامات میں تعاون جاری رکھے گا۔


وزیر خزانہ اسحق ڈارنےعالمی بنک کےصدرکوملک کی اقتصادی کارکردگی کےبارے میں آگاہ کرتےہوئےکہاکہ حکومت خصوصی اور پائیدار ترقی یقینی بنانے کی پالیسیوں پر عمل پیرا ہے۔انہوں نے کہا کہ انکم سپورٹ پروگرام کے تحت اس وقت پچاس لاکھ مستحقین کو مدد فراہم کی جار ہی ہے۔