وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان نے اسلام آباد کی سبزی منڈی میں بم دھماکے کی جگہ کا دورہ کیا

اسلام آباد میں دھماکہ ،22افراد جاں بحق
09 اپریل 2014 (20:38)
0

بدھ کی صبح اسلام آباد میں سبزی مندی میں ہونے والے بم دھماکے میں کم سے کم بائیس افراد جاں بحق اور ایک سو بائیس زخمی ہو گئے۔

نو زخمیوں کی حالت تشویشناک ہے۔اسسٹنٹ انسپکٹر جنرل اسلام آباد پولیس نے ریڈیو پاکستان کے نمائندے زاہد حمید سے باتیں کرتے ہوئے بائیس افراد کے جاں بحق ہونے کی تصدیق کی۔ انہوں نے بتایا کہ دھماکہ خیز مواد پھلوں کی پیٹی میں رکھا گیا تھا۔

 

صحافیوں سے باتیں کرتے ہوئے میڈیکل یونیورسٹی کے وائس چانسلر ڈاکٹر جاوید اکرم نے کہا کہ زیادہ تر میتوں کی شناخت کر لی گئی ہے اور انہیں ان کے ورثاء کے حوالے کر دیا گیا ہے۔انہوں نے کہا کہ تقریباً ساڑھے تین سو لوگوں نے زخمیوں کے لئے خون کا عطیہ دیا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ انیس میتیں پمز اور تین ہولی فیملی ہسپتال لائی گئیں۔


صدر ممنون حسین اور وزیراعظم نواز شریف نے سبزی منڈی میں بم دھماکے کی شدید مذمت کی ہے۔واقعے میں قیمتی انسانی جانوں کے ضیاع پر دکھ اور افسوس کا اظہار کرتے ہوئے انہوں نے متعلقہ حکام کو ہدایت کی ہے کہ زخمیوں کو علاج معالجے کی بہترین سہولتیں فراہم کی جائیں۔وزیر داخلہ چوہدری نثار علی خان اور وزیراعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف اور وزیراعلیٰ خیبرپختونخواء پرویز خٹک نے بھی سبزی منڈی دھماکے کی مذمت کی ہے۔


پنجاب کے وزیراعلیٰ شہباز شریف نے بم دھماکے کی شدید مذمت کی ہے ۔اُنہوں نے دھماکے میں قیمتی جانوں کے ضیاع پر گہرے دکھ اور افسوس کا اظہار کیا ۔


وزیرداخلہ چوہدری نثار علی خان نے اسلام آباد کی سبزی منڈی میں بم دھماکے کی جگہ کا دورہ کیا۔اُنہیں واقعے کے بارے میں بریفنگ دی گئی ۔وزیرداخلہ نے صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے حکومت کا یہ عزم ظاہر کیا کہ دھماکے میں ملوث مجرموں کو انصاف کے کٹہرے میں لایاجائے گا۔جب اُن سے دھماکے میں ملوث پس پردہ عناصر کے بارے میں پوچھا گیا تو اُنہوں نے کہا کہ تحقیقات جاری ہیں اور اس کے مکمل ہونے تک کچھ بھی کہنا مناسب نہیں ہوگا۔اُنہوں نے کہا کہ سبزیوں اور پھلوں کی تقریباََ تین سو گاڑیاں روزانہ منڈی آتی ہیں اور ہر گاڑی کو نگران عملے کے ذریعے بغیر مشینوں کے چیک کرنا عملی طور پر ممکن نہیں ہے ۔


اُنہوں نے کہا کہ کچی آبادیوں کے مکینوں کے اندراج کا عمل جاری ہے جو جلد ہی مکمل ہوجائے گا۔بعد میں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے وزیرداخلہ نے کہا کہ سبزی منڈی دھماکے میں زخمی ہونے والوں اور جاں بحق افراد کے ورثاء کو معاوضہ اگلے تین دن میں ادا کیاجانا چاہیئے جیسا کہ ایف ایٹ ضلعی عدالت سانحے کے موقع پر کیاگیا۔