Monday, 18 November 2019, 11:00:52 am
چین پاکستان اقتصادی راہداری کی فوری تکمیل حکومت کی اولین ترجیح ہے،وزیراعظم
October 09, 2019

عمران خان نے بدھ کے روز بیجنگ میں عظیم عوامی ہال میں نیشنل پیپلز کانگریس کے چیئرمین Li Zhan Shu سے گفتگو کرتے ہوئے کہا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری کے دوسرے مرحلے کی تکمیل سے سماجی واقتصادی ترقی کے فروغ اور پاکستان کے عوام کیلئے روزگار کے مواقع پیدا کرنے میں مدد ملے گی۔وزیراعظم نے خصوصی طور پر کہا کہ وہ غربت کے خاتمے کیلئے چین کے تجربات سے سیکھنا چاہتے ہیں اور وہ چین کی مثال کی پیروری کے ذریعے پاکستان میں غربت کے خاتمے کیلئے پرعزم ہیں۔انہوں نے پاکستان کے زرعی اور مصنوعی ذہانت کے شعبوں کو بہتر بنانے کیلئے بھی چین سے تعاون طلب کیا۔ انہوں نے تجویز دی کہ پاکستانک ے منفرد فوائد کی بدولت چینی کمپنیاں اپنی صنعتیں پاکستان منتقل کرسکتی ہیں۔عمران خان نے پاکستان کے قومی مفاد کے تمام معاملوں پر پاکستان کی غیر متزلزل حمایت پر چین کا شکریہ ادا کیا ۔ انہوں نے کہا کہ بھارت کے پانچ اگست کے غیر قانونی اقدامات سے مقبوضہ کشمیر میں سنگین انسانی صورتحال پیداہوگئی ہے۔انہوںنے یہ بات زور دے کر کہی کہ مقبوضہ کشمیر میں دو ماہ سے زائد عرصے سے عائد کرفیو کو فوری طور پر ختم ہونا چاہئے تاکہ لوگ بنیادی ضرورت کی اشیاء تک رسائی حاصل کرسکیں۔انہوں نے ان اقدامات کی وجہ سے خطے میں امن وسلامتی کیلئے خطرات کو بھی اجاگر کیا۔چین کے سترویں یوم تاسیس کے موقع پر چیئرمین LI کو مبارکباد دیتے ہوئے عمران خان نے اعادہ کیا کہ پاکستان اور چین قریبی دوست، مضبوط شراکت دار اور آہنی بھائی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ کچھ دہائیوں میں چین کی اقتصادی ترقی انتہائی متاثر کن اور قابل تقلید ہے۔

چیئرمین LI ZHANSHU نے پاکستان کی مرکزی قومی دلچسپی کے امور میں چین کی قیادت کی حمایت کے عزم کا اعادہ کیا ہے ۔انہوں نے کہاکہ چین وزیراعظم عمران خان کے تجویز کردہ اقدامات کی حمایت کرے گا ۔LI ZHANSHU نے تسلیم کیا کہ دونوں ملک نئے منصوبوں کی تجویز پیش کرسکتے ہیں جن کو سی پیک میںشامل کیا جاسکتا ہے ۔دونوں رہنمائوں نے پاک چینی دوطرفہ تعلقات کو مزید مستحکم بنانے کیلئے دوطرفہ دوروں کے سلسلے کو آگے بڑھانے اور پارلیمانی رابطوں کو بڑھانے پر اتفاق کیا ۔انہوں نے سیاسی ' ثقافتی ' تعلیمی اور عوام سے عوام کے تعلقات میں تعاون بڑھانے کے عزم پر بھی زوردیا ۔وزیراعظم عمران خان نے این پی سی کے چیئرمین کو دورہ پاکستان کی دعوت دی جو انہوں نے قبول کرلی ۔