وزیر اطلاعات نے کہا کہ اگر پی ٹی آئی انتخابی ٹربیونلز سے مطمئن نہیں تو پھر انہیں پارلیمنٹ میں اپنی تجاویز پیش کرنی چاہئیں

عمران کے دھاندلی الزامات حکومتی کمیٹی کوپیش نہیں کئے گئے:رشید
08 ستمبر 2014 (10:19)
0

وفاقی وزیر اطلاعات و نشریات سینیٹر پرویز رشید نے کہا ہے کہ پاکستان تحریک انصاف کے سربراہ کی جانب سے انتخابی دھاندلی کے الزامات مذاکراتی میز پر پیش کئے جانے چاہئے۔

اتوار کو یہاں نجی ٹی وی سے بات چیت کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ عمران خان گزشتہ 14 ماہ سے اپنی تقاریر میں الزامات لگا رہے ہیں جنہیں حکومت کی مذاکراتی کمیٹی کے سامنے نہیں پیش کیا گیا۔

انہوں نے کہا کہ مذاکراتی عمل میں جو مطالبات پیش کئے گئے ان کا تعلق الیکشن کمیشن کے کام کے طریقہ کار سے تھا اور حکومت الیکشن ٹربیونلز کے امور میں مداخلت نہیں کرسکتی۔

سینیٹر پرویز رشید نے کہا کہ اگر پی ٹی آئی کو انتخابی ٹربیونلز کے کام کی رفتار قابل قبول نہیں تو پھر عمران خان کو پارلیمنٹ میں اپنی تجاویز پیش کرنی چاہیے۔انہوں نے کہا کہ ریکارڈ کے مطابق پاکستان تحریک انصاف کے امیدواروں کے عدم تعاون کے باعث زیادہ تر کیسز میں تاخیر ہوئی ۔وفاقی وزیر نے کہا کہ لانگ مارچ سے قبل حکومت نے انتخابی اصلاحات کیلئے ایک پارلیمانی کمیٹی تشکیل دی اور وزیراعظم محمد نواز شریف نے دھاندلی کے الزامات کی چھان بین کیلئے ایک عدالتی کمیشن کا بھی اعلان کیا۔سینیٹر پرویز رشید نے کہا کہ پارلیمنٹ میں اپوزیشن جماعتوں نے ایک جرگہ تشکیل دیا جو مذاکراتی عمل کی بحالی میں سہولت کا کردار ادا کررہا ہے۔انہوں نے کہا کہ عمران خان کی سول نافرمانی کی اپیل خیبرپختونخوا کے عوام نے بھی مسترد کی جہاں ان کی اپنی حکومت ہے۔انہوں نے کہا کہ عمران خان بنی گالہ میں اپنی رہائش گاہ کا بجلی کا بل خود ادا کرتے ہیں اور جہانگیر ترین بھی اپنا انکم ٹیکس ادا کررہے ہیں۔وفاقی وزیر اطلاعات نے کہا کہ حکومت کو پیشگی اطلاع تھی کہ لانگ مارچ پرتشدد ہوکر سرکاری عمارات پر حملہ کرے گا ،تاہم حکومت نے اسے اسلام آباد جانے کی اجازت دی کیونکہ ہر شخص مارچ کو سیاسی حق قرار دے رہا تھا۔انہوں نے کہا کہ حکومت نے صبروتحمل کا مظاہرہ کیا اور مظاہرین کے خلاف طاقت استعمال نہیں کی۔پی ٹی وی کی عمارت کے حملے پر ایک سوال کے جواب میں انہوں نے کہا کہ فوٹیج اور نادرا کے ریکارڈ کی مدد سے حملے میں ملوث افراد کے خلاف مقدمات درج کئے جائیں گے۔