ریڈیو پاکستان کے خبروں اورحالات حاضرہ چینل کے پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے ممتاز تجزیہ کاروںنے کہا کہ وزیراعظم کا 341 ارب روپے کاکسان پیکیج ملک کی تاریخ میں غیر معمولی حیثیت رکھتا ہے۔

موجودہ حکومت نے زرعی مصنوعات کی لاگت کم کرنے کو اولین ترجیح دی ہے:تجزیہ کار
07 نومبر 2015 (13:13)
0

ممتاز تجزیہ کاروںنے کہاہے کہ موجودہ حکومت نے زرعی مصنوعات کی لاگت کم کرنے کو اولین ترجیح دی ہے۔ریڈیو پاکستان کے خبروں اورحالات حاضرہ چینل کے ایک پروگرام میں اظہار خیال کرتے ہوئے انہوں نے کہا کہ وزیراعظم کا 341 ارب روپے کاکسان پیکیج ملک کی تاریخ میں غیر معمولی حیثیت رکھتا ہے۔وزیراعظم نے کسان پیکیج کے تحت سیالکوٹ کے قریب سمڑیال میں کسانوں میں چیک تقسیم کئے ہیں۔


تجزیہ کار ڈاکٹر شاہد حسن صدیقی نے کہا کہ اقتدار میں آنے کے بعد وزیراعظم نوازشریف نے پاکستان عوام کو زیادہ سے زیادہ فائدہ پہنچانے کی خاطر اقتصادی ترقی کیلئے کام کیا۔پنجاب کے محکمہ زراعت کے ڈائریکٹر جنرل ڈاکٹر انجم علی نے کہا وزیراعظم نواز شریف نے 341 ارب روپے مالیت کے کسان پیکیج کی صورت میں قوم کو ایک عظیم تحفہ دیا۔ انہوں نے کہا پانچ ہزار روپے فی ایکڑ کی مالی امداد ساڑھے بارہ ایکڑ کی ملکیت والے چھوٹے کسانوں کو دی جائے گی۔


مسلم لیگ نون کی رہنما مائزہ حمید نے کہا کسان پاکستان کی معیشت کی ریڑھ کی ہڈی ہیں جنہیں اس وقت امداد کی ضرورت ہے کیونکہ حالیہ سیلاب سے ان کی فصلیں تباہ ہوگئی تھیں۔