اویس احمد لغاری نے ملک میں زرعی شعبے کی ترقی کے لئے حکومتی اقدامات کو سراہا ہے ۔

حکومت حزب اختلاف کو اعتماد میں لینے کیلئے تیار ہے: برجیس طاہر
07 جون 2017 (14:11)
0

قومی اسمبلی نے اگلے مالی سال کے لئے بجٹ پر عام بحث شروع کی۔بحث میں حصہ لیتے ہوئے افتخار الدین نے حکومت کو مسلسل پانچواں بجٹ پیش کرنے پر مبارکباد دی، انہوں نے کہا کہ معیشت کو مضبوط کرنے کے حکومتی اقدامات قابل تعریف ہیں۔اویس احمد لغاری نے ملک میں زرعی شعبے کی ترقی کے لئے حکومتی اقدامات کو سراہا، انہوں نے کسانوں کیلئے قرضوں پر سود کی شرح میں کمی اور زرعی ترقیاتی بینک کے استعداد کار بڑھانے سے متعلق تجاویز دیں۔

بحث میں حصہ لیتے ہوئے امور کشمیر اور گلگت بلتستان کے وزیر برجیس طاہر نے کہا کہ حکومت حزب اختلاف کو اعتماد میں لینے کیلئے تیار ہے ۔انہوںنے کہا کہ حزب اختلاف کے ارکان کو اپنے حلقوں کے مسائل اجاگر کرنے کا موقع بروئے کار لانا چاہیے۔اس موقع پر داخلہ کے وزیر مملکت بلیغ الرحمان نے کہا کہ قائد حزب اختلاف ارکان کو بجٹ بحث میں حصہ لینے کی اجازت نہیں دے رہے انہوں نے کہا کہ حزب اختلاف کے زیادہ تر ارکان بجٹ پر اظہار خیال کرنا چاہتے ہیں۔
پانی و بجلی کے وزیر مملکت عابد شیر علی نے کہا کہ پاکستان پیپلزپارٹی کو وفاقی حکومت پر بے بنیاد الزامات لگانے کی بجائے صوبہ سندھ پر توجہ مرکوز کرنی چاہیے۔ حزب اختلاف کی جماعتوں سے تعلق رکھنے والے ارکان نے پاکستان ٹیلی ویژن پر قائد حزب اختلاف کی تقریر براہ راست نشر کرنے کے اپنے مطالبے کے حق میں قومی اسمبلی سے واک آئوٹ کیا۔

نسیمہ حفیظ پانیزئی نے خواتین کی ترقی اور صوبہ بلوچستان کے لئے مزید فنڈز مختص کرنے کی تجویز دی۔ انہوں نے کہاکہ ملک میں پانی کی مسئلے کی طرف توجہ دی جانی چاہیے ۔ایوان کااجلاس کل گیارہ بجے تک ملتوی کردیاگیا۔