اکیس سے پینتالیس سال تک کی عمر کے افراد ایک لاکھ سے بیس لاکھ روپے تک کے قرضے کے لئے  درخواست دے سکتے ہیں۔

07 دسمبر 2013 (20:18)
0

محمد نواز شریف نے نوجوانوں کو اپنا کاروبار شروع کرنے میں مدد دینے کیلئے وزیراعظم کے یوتھ بزنس لونز کا آغازکر دیاہے۔


اس سکیم کے تحت نیشنل بینک آف پاکستا ن اور فرسٹ ویمن بینک کے ذریعے ایک لاکھ نوجوانوں کو سالانہ آٹھ فیصد شرح منافع پر رعایتی قرضے فراہم کیے جائیں گے۔


مجموعی شرح منافع پندرہ فیصد ہوگا سات فیصد درخواست گزار کی جانب سے حکومت ادا کرے گی۔


اکیس سے پینتالیس سال تک کی عمر کے افراد ایک لاکھ سے بیس لاکھ روپے تک کے قرضے کے لئے  درخواست دے سکتے ہیں۔


چھوٹے قرضے سات سال کے عرصے کے لئے ہوںگے۔اس کے علاوہ ایک سال کی رعایتی مدت بھی ہوگی


یہ قرضے چاروں صوبوں ' گلگت بلتستان 'آزاد جموں و کشمیراور فاٹا سمیت ملک بھر میں فراہم کیے جائیں گے۔


وزیر اعظم محمد نوا ز شریف نے کہا کہ وہ انتخابی مہم کے دوران نوجوانوںسے کیے گئے وعدے پورے کر رہے ہیں۔


یوتھ بزنس لونز کے اجراء کی تقریب سے خطاب میں انہوں نے کہا یہ بڑا تضاد ہے کہ اربوں روپے کے قرضے بااثر اور وسائل کے حامل افرا د کو دیئے جاتے رہے ہیں لیکن آبادی کے کم مراعات یافتہ افراد کو ایسے مواقع فراہم نہیں کیے جاتے۔        


وزیراعظم نے کہا کہ دوسرے ملکوں میں نوجوان ان کی معیشت کیلئے ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت رکھتے ہیں اور کوئی وجہ نہیں کہ نوجوان جوآبادی کا ساٹھ فیصد ہیں ہمیں ترقی اور خوشحالی کے اوج کمان پر نہ لے جائیں۔


وزیراعظم نے کہا کہ ماضی میں صنعتوں اوربینکوں کوقومیانے کے عمل نے ملکی معیشت کو تباہ کیا' انہوں نے کہا کہ ہماری ماضی کی حکومت نے یہ فیصلہ واپس لیا اور بینکوں کی نجکاری کی اور اب وہ   اربوں روپے کما کر حکومت کو ٹیکسوں کی ادائیگی کررہے ہیں انہوں نے کہا کہ اب موجودہ حکومت اداروں کی نجکاری کی طرف بڑھ رہی ہے۔


محمد نوازشریف نے کہا کہ فیکٹری چلانا حکومت کاکام نہیں ہے بلکہ اسے امن و امان کی صورتحال بہتر بنانے ' دہشت گردی کے خاتمے ' فرقہ واریت کے انسداد اورملک کا تشخص بہتر بنانے پر توجہ دینی چاہیے۔


وزیراعظم نے کہا کہ میرے امریکہ کے حالیہ دورے میں صدر اوباما اور ان کی انتظامیہ کے ارکان نے ایک ہی سوال بار بار پوچھا اور وہ یہ تھا کہ امریکہ پاکستان کی کیا مدد کرسکتا ہے '            


محمد نواز شریف نے کہا کہ میںنے انہیں بتایا کہ پاکستان کو امریکہ سے کوئی مالی مدد درکار نہیں بلکہ وہ آپ کی منڈیوں تک مزید رسائی چاہتا ہے۔


وزیر اعظم کے یوتھ بزنس لونز کی چیئرپرسن مریم نواز نے اس موقع پر خطاب میں کہا کہ قرضوں کا آغاز انتخابات میں نواز شریف کے وعدوں کی تکمیل ہے۔انہوں نے کہا دوسرے صرف وعدہ ہی کرتے ہیں لیکن پی ایم ایل (ن) کی حکومت نے مالی مشکلات کے باوجود بزنس لونز سمیت نوجوانوں کی فلاح کیلئے کامیابی سے چھ پروگرام شروع کیے ہیں۔


مریم نواز نے کہا کہ اس پروگرام سے ملک میں کاروباری سرگرمیوں کو فروغ ملے گا انہوں نے کہا کہ درخواست گزاروں کیلئے تین شرائط ہیں وہ پاکستانی ہوں ' ان کے پاس جائز قومی شناختی کارڈ ہو اور ان کے پاس ایک ضمانت دینے والا شخص ہو۔


انہوں نے کہا یوتھ بزنس لونزکیلئے فارم پیرکے دن سے ملیں گے اور ان کی کوئی قیمت نہیں لی جائے گی۔


چیئرپرسن نے کہا کہ قرضوں میں شفافیت کو یقینی بنانے کیلئے جانچ پڑتال کا ضروری نظام بھی وضع کیا گیا ہے۔


وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ انتخابی منشور کے بعض حصے جن کی جھلک موجودہ سال کے بجٹ میں دیکھی جاسکتی ہے ان پر عملی طور پر عملدرآمد کیا جارہا ہے۔


انہوں نے کہا کہ وزیراعظم نے اپنا صوابدیدی فنڈ ختم کر دیا ہے اور حکومت نے وزیراعظم کے دفتر کے اخراجات چالیس فیصد اور دیگر وزارتوں اور ڈویژنوںکے اخراجات میں تیس فیصد کمی کر دی ہے انہوں نے کہا بیرونملک مشن بھی کم کیے جارہے ہیں جس سے ساڑھے تین ارب روپے کی بچت ہوگی۔


وزیرخزانہ نے کہا کہ وزیراعظم نے نوجوانوں کیلئے چھ سکیموں کا اعلان کیا ہے اور آنے والے دنوں میں ایک ایک کرکے ان کا اجراء کیا جائے گا۔