نوازشریف نے پانی و بجلی کی وزارت کو سال2023 تک بجلی کی طلب اوررسد کا تجزیہ کرنے کی ہدایت کی ہے۔

وزیراعظم کا بجلی کی طلب او ررسد سے متعلق فعال منصوبہ بندی پر زور
06 جون 2017 (15:06)
0

توانائی کے بارے میں کابینہ کمیٹی کا اجلاس آج اسلام آباد میں ہوا جس میں ایل این جی پر مبنی ایک ہزار دوسو میگاواٹ پیداواری صلاحیت کے حامل نئے بجلی گھر کے قیام کی اصولی منظوری دی گئی۔ وزیراعظم محمد نواز شریف نے اجلاس کی صدارت کی ۔ وزیراعظم نے بجلی کی طلب او ررسد سے متعلق فعال منصوبہ بندی کرنے پر زوردیا۔

انہوں نے پانی و بجلی کی وزارت کو سال2023 تک بجلی کی طلب اوررسد کا تجزیہ کرنے کی ہدایت کی ہے تاکہ مستقبل میں ملک کی توانائی کی ضرورتوں کو پورا کرنے کیلئے مربوط طویل مدتی منصوبہ بندی کی جاسکے۔نوازشریف نے مرمت کے کام کی بناء پر بجلی گھروں کی بندش کا شیڈول گرمیوں سے سردیوں میں منتقل کرنے کی بھی ہدایت کی تاکہ لوگوں کو انتہائی طلب کے مہینوں کے دوران زیادہ سے زیادہ بجلی فراہم کی جاسکے۔
توانائی کے بارے میں کابینہ کمیٹی نے متفقہ طورپر یہ منظوری دی ہے کہ رمضان کے دوران ترقیاتی کاموں کی بناء پر بجلی بند نہیں کی جائے گی۔

اجلاس میں یہ فیصلہ بھی کیاگیا کہ بجلی کی طلب کے جائزے میں معاشی خوشحالی کے باعث الیکٹرانک آلات کے استعمال میں اضافہ اوربجلی کے صارفین کابجلی کے استعمال کے حوالے سے رویے جیسے عوامل بھی شامل کئے جائیں گے۔
سیکرٹری پانی و بجلی نے اجلاس کو کمپنی کے گزشتہ اجلاس میں کئے گئے فیصلوں پر پیشرفت کے بارے میں آگاہ کیا، جس میں خزانہ ،پانی و بجلی اورقدرتی وسائل کی وزارتوں کی بین الوزارتی کمیٹی کی کارکردگی ستمبر2018 تک بجلی کی طلب اور رسد کا تجزیہ اور بند پڑے بجلی گھروںکو فعال بنانے کے فیصلے شامل ہیں۔