نواز شریف نے کہاہے کہ پاکستان کو اپنی سماجی ، اقتصادی ترقی اور اپنے صنعتی شعبے کو اسکی مکمل صلاحیت کے مطابق چلانے کیلئے توانائی کی ضرورت ہے۔

وزیراعظم کا کاسا1000 منصوبے پر جلد از جلد عملدرآمد کیلئے پاکستان کے عزم کا اعادہ
06 جولائی 2017 (12:48)
0

وزیراعظم محمد نواز شریف نے کاسا1000 منصوبے پر جلد از جلد عملدرآمد کیلئے پاکستان کے عزم کا اعادہ کیا ہے۔وہ آج دوشنبے میں کاسا 1000 کانفرنس کے چار فریقی اجلاس سے خطاب کررہے تھے جس میں میزبان ملک کے صدر ، افغانستان کے صدر کرغزستان کے وزیراعظم نے شرکت کی۔
وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان کو اپنی سماجی ، اقتصادی ترقی اور اپنے صنعتی شعبے کو اسکی مکمل صلاحیت کے مطابق چلانے کیلئے توانائی کی ضرورت ہے۔
انہوں نے اس بات پر اطمینان کا اظہار کیا کہ دنیا کے ممتاز مینوفیکچررز نے کاسا1000 کے کنورٹر اسٹیشن فراہم کرنے میں اپنی دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہا کہ کرغزستان سے تاجکستان اور تاجکستان سے افغانستان تک ٹرانسمیشن لائن بچھانے کے لئے ٹینڈر جاری کردئیے گئے ہیں اور اس وقت ان کا جائزہ لیا جا رہا ہے وزیر اعظم نے امید ظاہر کی کہ اس منصوبے پر بہت جلد کام شروع ہو جائے گا۔

نواز شریف نے کہا کہ کاسا1000 خطے میں ایک بڑا اہم منصوبہ ہے جو وسطی ایشیاء میں تاجکستان اور کرغزستان کو بجلی کے ایک گرڈ کے ذریعے پاکستان اور افغانستان سے ملاتا ہے۔انہوں نے کہا کہ اس منصوبے کی تکمیل سے پاکستان موسم گرما میں تاجکستان اور کرغزستان سے ایک ہزار میگاواٹ جبکہ افغانستان تین سو میگاواٹ بجلی حاصل کرے گا۔
اس منصوبے سے رکن ملکوں کو اقتصادی ، سماجی اور ماحولیاتی فوائد حاصل کرنے میں مدد ملے گی۔وزیراعظم نے کہا کہ یہ منصوبہ مجوزہ وسطی ایشیاء اور جنوبی ایشیاء کو بجلی کی علاقائی منڈی کے تصور کو عملی جامہ پہنانے کی جانب اہم قدم ہے۔یہ منصوبہ بجلی کی کمی کے شکار جنوبی ایشیاء اور توانائی سے مالامال وسط ایشیاء کے درمیان تعاون کو فروغ دینے کی اچھی مثال ثابت ہو گا۔

اس سے پہلے وزیراعظم محمد نواز شریف اور افغان صدر اشرف غنی نے آج دوشنبے میں غیررسمی ملاقات کی۔