وزیر خزانہ کا بدعنوانی کے خاتمے کیلئے حکومتی اقدامات کا جائزہ
05 نومبر 2016 (19:28)
0

وزیرخزانہ اسحاق ڈار نے کہا ہے کہ ٹیکس کے امور میں باہمی انتظامی معاونت سے متعلق کثیر الجہتی OECD کنونشن میں شمولیت سے پاکستان کا مالیاتی شعبہ مستحکم ہوا ہے جس سے نظم و نسق میں مزید شفافیت پیداہوگی۔ انہوں نے یہ بات ہفتہ کے روز اسلام آباد میں ایک اجلاس کی صدارت کرتے ہوئے کہی جس میں اچھے نظم و نسق، شفافیت میں بہتری اور بدعنوانی کے خاتمے کو یقینی بنانے کیلئے حکومتی اقدامات کا جائزہ لیاگیا۔
وزیرخزانہ نے ہدایت کی کہ دوسرے بین الاقوامی کنونشنز میں بھی پاکستان کی شمولیت کی خواہش پر غورکرنے کیلئے بین الوزارتی مشاورت کی جانی چاہیے تاکہ نظم و نسق میں شفافیت پیدا کی جاسکے۔ انہوں نے کہا کہ کاروباری مقاصد کیلئے عالمی سطح پر رقم کی منتقلی کے سلسلے میں سرکاری عہدیداروں کے رشوت میں ملوث ہونے اور برطانوی حکومت کی جانب سے سرکاری اشتراک عمل کے اقدام اور ان کثیر الجہتی فورموں میں شمولیت کیلئے پاکستان کی تیاری کے حوالے سے سفارشات کا جائزہ لیا جانا چاہیے۔
انہوں نے کہاکہ ان کثیر الجہتی معاہدوں کا حصہ بننے سے مالیاتی جرائم سے نمٹنے میں پاکستان کی کوششوں کو فائدہ پہنچے گا اور انسداد بدعنوانی کے لئے مقامی طریقہ کار مزید مضبوط ہوگا۔