وزیراعظم کی صاحبزادی نے کہاہے کہ وزیراعظم اور ان کی حکومت پر بدعنوانی یا کمیشن لینے کا کوئی الزام نہیں ہے۔

قانون کی حکمرانی, آئینی بالادستی کیلئے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کے روبرو پیش ہوئی:مریم نواز
05 جولائی 2017 (16:20)
0

مریم نواز نے پانامہ پیپرز کے مقدمے کی تحقیقات کیلئے قائم مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کے روبرو اپنا بیان قلمبند کرایا۔اسلام آباد میں فیڈرل جوڈیشل اکیڈمی کے باہر صحافیوں سے گفتگو کرتے ہوئے مریم نواز نے کہا کہ انہوں نے پوچھے گئے تمام سوالات کے جواب دئیے۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان مسلم لیگ ن اور اسکے حامیوں کے لئے یہ فخر کی بات ہے کہ وزیراعظم اور ان کی حکومت پر بدعنوانی یا کمیشن لینے کا کوئی الزام نہیں ہے۔انہوں نے کہا کہ مخالفین صرف خاندان کے کاروباری معاملات کو نشانہ بنا رہے ہیں۔
انہوں نے کہا کہ جو سرکاری رقوم میں خردبرد کے الزامات کا سامنا کرنے والے حکم امتناعی کے پیچھے چھپ رہے ہیں انہوں نے اس بات پر حیرانی کا اظہار کیا کہ وہ افراد جن کو کوئی ذریعہ آمدن اور کاروبار نہیں ان سے پوچھ گچھ کیوں نہیں کی جا رہی۔ مریم نواز نے کہا کہ وہ اس بات سے بخوبی آگاہ ہیں کہ انہیں مختلف لیکس میں بارہا کیوں ملوث کیا جا رہا ہے انہوں نے کہا کہ دراصل مخالفین بیٹی کا نام شامل کر کے وزیراعظم کو دباؤ میں لانا چاہتے ہیں تاہم انہیں کسی غلط فہمی میں نہیں رہنا چاہئیے کیونکہ وہ ثابت کریں گی کہ وہ اپنے والد کی طاقت ہیں انہوں نے کہا کہ اس شخص کی بیٹی ہے جس نے انہیں کسی بھی جارح کے خلاف ڈٹ جانے کا درس دیا ہے۔
انہوں نے کہا کہ ہم ملک میں قانون کی حکمرانی اور آئین کی بالادستی کے لئے مشترکہ تحقیقاتی ٹیم کے روبرو پیش ہوئے۔انہوں نے مخالفین کو خبردار کیا کہ و ہ اس قسم کے ہتھکنڈے استعمال کر کے وزیراعظم کے خلاف سازش کرنے سے باز رہیں ۔ انہوں نے کہا کہ وزیراعظم عوام کی مزید بھاری حمایت سے دوبارہ اقتدار میں آئیں گے۔
انہوں نے کہا کہ وزیراعظم آئین کی بالادستی اور جمہوری نظام کے لئے ثابت قدم ہیں۔ انہوں نے امید ظاہر کی کہ پاکستان مسلم لیگ ن سال 2018 کے انتخابات میں دوبارہ کامیابی حاصل کرے گی۔