نوازشریف نے کہا ہے کہ پاکستان بھارت کے ساتھ جموں وکشمیر سمیت تمام دیرینہ تنازعات کے پرامن حل کا خواہاں ہے۔

پاکستان اپنے تمام ہمسایہ ملکوں کے ساتھ اچھے تعلقات چاہتا ہے:وزیراعظم
05 جولائی 2017 (14:13)
0

وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا ہے کہ پاکستان اپنے تمام ہمسائیوں کے ساتھ اچھے تعلقات برقرار رکھنا چاہتا ہے ۔وہ آج دوشنبے میں تاجکستان کے صدر امام علی رحمان سے معاونین کے بغیر ملاقات میں باتیں کر رہے تھے۔ وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان بھارت کے ساتھ جموں وکشمیر سمیت تمام دیرینہ تنازعات کے پرامن حل کا خواہاں ہے ۔انہوں نے کہا کہ بھارت نے کنٹرول لائن پر کشیدگی بڑھائی اور بھارتی فوج نے بارہا جنگ بندی معاہدے کی خلاف ورزی کی۔ وزیراعظم نے کہا کہ کاسا1000 منصوبہ پاکستان اور تاجکستان کے درمیان دوطرفہ تعلقات میں ایک اہم سنگ میل ہے ۔انہوں نے کہا کہ ہم تاجکستان کے ساتھ مختلف شعبوں میں تعلقات کو فروغ دینا چاہتے ہیں۔

وزیراعظم نے کہا کہ پاکستان تاجکستان کے ساتھ تمام شعبوں میں تعاون بڑھانا چاہتا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ مختلف شعبوں میں دوطرفہ تعلقات بڑھانے کے روشن امکانات موجود ہیں۔نواز شریف نے کہا کہ پاکستان کی خواہش ہے کہ تاجکستان کے ساتھ دوطرفہ تجارت کو پچاس کروڑ ڈالر سالانہ تک بڑھایا جائے۔ انہوں نے کہا کہ دونوں ملک اپنے اس ہدف کے حصول کے لئے ایک دوسرے سے تعاون کر رہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان نے سال 2015 میں دوشنبے میں تین تجارتی نمائشوں کا انعقاد کیا جبکہ رواں سال تاجکستان میں ایک کاروباری فورم کا اہتمام کیا گیا۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان چاہتا ہے کہ تاجکستان بھی پاکستان میںتجارتی میلوں کا اہتمام کرے۔
وزیراعظم نے اس اعتماد کا اظہار کیا کہ چین پاکستان اقتصادی راہداری خطے میں روابط کو مضبوط بنائے گی۔ انہوں نے کہا کہ گوادر بندرگاہ ، شاہراہیں اور ریل نیٹ ورک سمیت پاکستان کا پورا بنیادی ڈھانچہ تاجکستان کے لئے حاضر ہے ۔انہوں نے کہا کہ پاکستان اور تاجکستان کے دفاعی اور قانون نافذ کرنے والے ادارے دہشت گردی کی لعنت کے خاتمے کیلئے مل کر کام کر رہے ہیں۔نواز شریف نے تاجکستان کی مسلح افواج کے اہلکاروں کو تربیتی مواقعوں کی بھی پیشکش کی۔

اس سے پہلے وزیراعظم نوازشریف تاجکستان کے دو روزہ سرکاری دورے پردوشنبے پہنچے تو ان کا پرتپاک استقبال کیا گیا۔تاجکستان کے وزیراعظم Kokhir Rasulzoda نے ہوائی اڈے پر ان کا استقبال کیا۔

باضابطہ خیرمقدمی تقریب قومی محل میں منعقد ہوئی جس میں صدر امام علی رحمان نے وزیرعظم کو خوش آمدید کیا۔ تاجک مسلح افواج کے چاق وچوبند دستے نے وزیراعظم نواز شریف کو گارڈ آف آنر پیش کیا ۔