ڈاکٹر شاہد حسن صدیقی نے کہاکہ توانائی کے منصوبوں میں حالیہ پیشرفت سے نہ صرف توانائی کی قلت پر قابوپایاجاسکے گا بلکہ ملک میں صنعتی سرگرمیوں کو بھی فروغ ملے گا ۔

File photo

تجزیہ کاروں نے توانائی قلت پر قابوپانے کیلئے حکومتی اقدام کو سراہا
04 ستمبر 2016 (14:19)
0

تجزیہ کاروں نے ملک میں توانائی کی قلت پر قابوپانے کیلئے کوئلے ، سورج اور ہوا سے بجلی پیدا کرنے کے ذرائع بروئے کار لانے کے حکومتی اقدام کو سراہا ہے ۔ ریڈیوپاکستان کے خبروں اور حالات حاضرہ کے چینل میں اظہارخیال کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ یہ بات خوش آئند ہے کہ ملک میں تحقیق اور ترقی ایک ایسے نقطے پر پہنچ گئی ہے جہاں بجلی پیدا کرنے کے نئے ذرائع معاشی لحاظ سے موثر بنتے جارہے ہیں ۔

توانائی کے ماہراوروزارت پٹرولیم اور قدرتی وسائل کے سابق سیکرٹری ڈاکٹر غضنفر احمد نے کہاکہ توانائی کے شعبے میں تحقیق کی رفتار ظاہر کرتی ہے کہ 2020 تک پون اور شمسی توانائی سستی اور آسانی سے دستیاب ہوگی ۔
مباحثے میں حصہ لیتے ہوئے ماہر اقتصادیات ڈاکٹر شاہد حسن صدیقی نے کہاکہ توانائی کے منصوبوں میں حالیہ پیشرفت سے نہ صرف توانائی کی قلت پر قابوپایاجاسکے گا بلکہ ملک میں صنعتی سرگرمیوں کو بھی فروغ ملے گا ۔ انہوں نے کہاکہ ملکی معاشی اسی صورت مضبوط بنیادوں پر استوار ہوگی جب ہم بجلی پیداکرنے کیلئے پانی اور کوئلے کے دستیاب وسائل بروئے کار لانے کا سلسلہ جاری رکھیں۔