وزیر اعظم کی زیر صدارت اجلاس میں ملک کی داخلی و خارجی سلامتی صورتحال کا جائزہ۔

 قومی سلامتی کمیٹی کا ہر قیمت پردفاع وطن کا عزم
04 اکتوبر 2016 (18:26)
0

قومی سلامتی کمیٹی نے عوام کی بھرپور حمایت سے ہر قیمت پر ملک کے دفاع کو یقینی بنانے کا عزم ظاہر کیا ہے۔
کمیٹی کا اجلاس وزیراعظم نواز شریف کے زیر صدارت منگل کے روزاسلام آباد میں ہوا۔
اجلاس میں ملک کی اندرونی و بیرونی سلامتی کی صورتحال خصوصاً کنٹرول لائن کی صورتحال اور مسلح افواج کی پیشہ وارانہ تیاریوں کا تفصیلی جائزہ لیا گیا۔

کمیٹی نے بھارت کی طرف سے سرجیکل حملوں کے حالیہ پروپیگنڈے اور جھوٹے دعوئوں کا حوالہ دیتے ہوئے کہا کہ بھارت عالمی برادری کی توجہ ہٹانے کیلئے بے سود کوششیں کرنے کی بجائے خطے میں پائیدار امن کے قیام کیلئے دیرینہ مسئلہ کشمیر حل کرے۔
بھارت کشمیر میں طاقت کا وحشیانہ استعمال روکے اور کشمیریوں کی اپنے حق خودارادیت کے حصول کی جائز اور قانونی جدوجہد کو تسلیم کرے۔
اجلاس کے شرکاء نے کہا کہ پاکستان دہشت گردی کے خلاف موثر انداز میں لڑرہا ہے اور دہشت گردی کے خلاف جنگ میں نمایاں کامیابیاں حاصل کی ہیں' کنٹرول لائن اور مشرقی سرحدوں پر کشیدگی ایک اہم مرحلے پر دہشت گردی کے خلاف جنگ سے پاکستان کی توجہ ہٹانے کے مترادف اور دہشت گردی کے خلاف پاکستان کی کامیابیوں کیلئے نقصان دہ ہے تاہم پاکستانی قوم اور اس کی مسلح افواج کسی بھی خطرے کا بھرپور جواب دینے کیلئے مکمل طور پر تیار ہیں۔


اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے وزیراعظم نے کہا کہ مقبوضہ کشمیر کے لوگ اپنے ماقابل تنسیخ حق خودارادیت کیلئے جدوجہد کررہے ہیں جس کی ضمانت اقوام متحدہ کی سلامتی کونسل کی قراردادوں میں دی گئی ہے اور بھارتی سیکورٹی فورسز کے وحشیانہ مظالم سے انہیں دبایا نہیں جاسکتا۔
انہوں نے کہا یہ ضروری ہے کہ اقوام متحدہ اور دیگر ملک مقبوضہ کشمیر کے بے گناہ اور نہتے عوام کیلئے اپنے دیرینہ وعدوں کو پورا کریں۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان اور کشمیر الگ نہیں ہوسکتے اور ہم ہر فورم پر کشمیری عوام کی اخلاقی، سیاسی اور سفارتی حمایت جاری رکھیں گے۔
نواز شریف نے کہا کہ پاکستان کسی ملک یا قوم کے خلاف جارحانہ عزائم نہیں رکھتا۔ ہم امن اور اجتماعی بہتری پر یقین رکھتے ہیں تاہم ہماری امن کی خواہش کو کمزوری نہ سمجھا جائے، ہماری مسلح افواج ملکی سلامتی اور علاقائی حدود کو درپیش کسی بھی خطرے سے نمٹنے کی بھرپور صلاحیت رکھتی ہیں۔
اجلاس میں دفاع، داخلہ ، خزانہ اور اطلاعات کے وزرا، چیئرمین جائنٹ چیفس آف سٹاف کمیٹی، تینوں مسلح افواج کے سربراہان اور قومی سلامتی کے مشیر نے شرکت کی۔
چاروں وزرائے اعلیٰ ، خارجہ امور کے بارے میں وزیراعظم کے معاون خصوصی ، ڈی جی آئی ایس آئی، ڈی جی ملٹری آپریشنز اور سیکرٹری نیشنل سیکورٹی ڈویژن نے بھی خصوصی دعوت پر اجلاس میں شرکت کی۔