وزیر مملکت شیخ آفتاب نے کہا کہ ریڈیو پاکستان کمرشل ادارہ نہیں ہے اور وفاقی حکومت اسے فنڈز فراہم کرتی ہے تاکہ وہ اپنے روزمرہ کے اخراجات پورے کرسکے۔

ریڈیو پاکستان نشریاتی وقت کی فروخت سے مالی حالات بہتر بنانے کیلئے کوشاں
04 اکتوبر 2016 (17:50)
0

سینیٹ کو منگل کے روز بتایاگیا کہ پاکستان براڈ کاسٹنگ کارپوریشن نشریاتی وقت کی فروخت سے اپنے مالی حالات کو بہتر بنانے کیلئے پوری طرح کوشاں ہے۔

ایک سوال پر پارلیمانی امور کے وزیر مملکت شیخ آفتاب احمد نے کہا کہ ریڈیو پاکستان کمرشل ادارہ نہیں ہے اور وفاقی حکومت اسے فنڈز فراہم کرتی ہے تاکہ وہ اپنے روزمرہ کے اخراجات پورے کرسکے۔
انہوں نے کہا کہ ریڈیو پاکستان کا اولین مقصد معلومات، تعلیم اور تفریح فراہم کرکے قومی یکجہتی کو فروغ دینا ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان براڈ کاسٹنگ کارپوریشن نے ایف ایم 101 نیٹ ورک کے مارکیٹ حقوق ایک کمپنی کو دیئے ہیں تاکہ تشہیر سے حاصل ہونے والی آمدنی کو موجودہ سطح بارہ کروڑ 59 لاکھ 82 ہزار سے بڑھا یاجاسکے۔
وزیر مملکت نے کہا کہ ایک گھنٹے کا نشریاتی وقت وائس آف امریکہ اور دوگھنٹے کا نشریاتی وقت چائنہ ریڈیو انٹرنیشنل کو دیا گیا ہے جس سے سالانہ پانچ کروڑ چالیس لاکھ روپے سے زائد کی آمدنی ہوگی ۔ ادارے نے کراچی میں پی بی سی کی عمارت کی نو منزلیں 97 لاکھ 42 ہزار روپے سالانہ کرائے پر دی ہیں جس میں ہر سال دس فیصد اضافہ ہوگا۔
ادارے نے پی بی سی کی ویب سائٹ پر موجود مواد کی گوگلAdsense کے ذریعے فروخت کیلئے ایک اور کمپنی کے ساتھ معاہدے پر دستخط کئے ہیں۔ اس بات کی توقع ہے کہ اس معاہدے سے پاکستان براڈ کاسٹنگ کارپوریشن کو خاطر خواہ آمدنی ہوگی۔