نیشنل ایکشن پلان کے حوالے سے منعقدہ اجلاس میں اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ مطلوبہ نتائج کے لئے وفاقی وصوبائی حکومتوں اور تمام قانون نافذ کرنے والے اداروں کے درمیان بھرپور تعاون کی ضرورت ہے۔

File photo

دہشتگردی اور پرتشدد انتہا پسندی کے خاتمے کیلئے قومی پالیسی وضع کرنا ناگزیر ہے: وزیراعظم
04 اکتوبر 2016 (07:40)
0

وزیراعظم نواز شریف کے زیر صدارت آج اسلام آباد میں ایک اجلاس میں دہشتگردی کے خلاف نیشنل ایکشن پلان پر پیش رفت کا جائزہ لیا گیا۔اجلاس کے شرکاء نے سیکورٹی فورسز اور قانون نافذ کرنے والے اداروں کی قربانیوں کو سراہا جن کے نتیجے میں مادروطن میں سلامتی کی صورتحال میں نمایاں بہتری آئی ہے۔

اجلاس میں اس بات پر اتفاق کیا گیا کہ مطلوبہ نتائج کے لئے وفاقی وصوبائی حکومتوں اور تمام قانون نافذ کرنے والے اداروں کے درمیان بھرپور تعاون کی ضرورت ہے۔
شرکاء نے دشمن کے عزائم ناکام بنانے کے لئے خفیہ معلومات کے حصول ، تبادلے ، تجزئیے اور انہیں بروئے کار لانے کے عمل کو مزید بہتر بنانے کے عزم کا اظہار کیا۔
اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیراعظم محمد نواز شریف نے کہا کہ دہشت گردی اور پرتشدد انتہا پسندی کے خاتمے کیلئے قومی پالیسی وضع کرنا ناگزیر ہے۔
انہوں نے کہا کہ قوم ہم سے معاشرے کو ان برائیوں سے پاک کرنے کی توقع رکھتی ہے اور ہم کسی بھی صورت اسے مایوس نہیں کریں گے۔
اس سے پہلے قومی سلامتی کے مشیر ناصر خان جنجوعہ نے اجلاس نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد میں پیش رفت سے متعلق بریفنگ دی۔اجلاس میں وفاقی وزراء ، صوبائی وزرائے اعلیٰ ، بری فوج کے سربراہ ، آئی ایس آئی کے ڈائریکٹر جنرل اور دوسرے اعلیٰ حکام نے شرکت کی۔