اُنہوں نے کہا کہ یہ سکیم کسی خاص علاقے کیلئے نہیں بلکہ پورے ملک میں اس پر شفاف انداز میں عملدرآمد کیاجارہاہے ۔

قرضہ لینےوالےنوجوان اقتصادی انقلاب کےعلمبردارہونگے:وزیراعظم
04 جون 2014 (20:31)
0

وزیراعظم محمد نوازشریف نے یقین ظاہر کیا ہے کہ کاروبار کیلئے قرضہ لینے والے نوجوان ملک میں سماجی اور اقتصادی انقلاب کے علمبردار ثابت ہوں گے ۔اُنہوں نے یہ بات بدھ کے روز اسلام آباد میں نوجوانوں کیلئے وزیراعظم کی قرضہ سکیم کی دوسری کمپیوٹرائزڈ قرعہ اندازی سے خطاب کرتے ہوئے کہی ۔وزیراعظم نے کہا کہ اس سکیم کے پہلے مرحلے میں قرضوں کیلئے اڑتیس ہزار درخواستیں موصول ہوئیں جن میں مردوں کی اکتیس ہزار اور خواتین کی سات ہزار درخواستیں شامل ہیں ۔ان میں سے چھ ہزار درخواستیں کمپیوٹر قرعہ اندازی سے منتخب کی گئیں اور آج دوسری قرعہ اندازی میں مزید چھ ہزار درخواستیں منتخب کی جارہی ہیں ۔


وزیراعظم نے کہا کہ قرضہ حاصل کرنے والے افراد نہ صرف اپنے کاروبار شروع کرسکیں گے بلکہ دوسروں کو بھی روزگار کے مواقع فراہم کریں گے ۔وزیراعظم نے کہا کہ یہ سکیم کسی خاص علاقے کیلئے نہیں بلکہ پورے ملک میں اس پر شفاف انداز میں عملدرآمد کیاجارہاہے ۔وزیراعظم نے کہا کہ حکومت نے قرض حسنہ سکیم بھی شروع کی ہے جس سے آئندہ سال دو لاکھ پچاس ہزار خاندانوں کو فائدہ ہوگا۔ اُنہوں نے کہا کہ سکیم میں خواتین کا پچاس فیصد حصہ ہوگا۔


اُنہوں نے کہا کہ نوجوانوں کے تربیتی پروگرام کو وسعت دے کر اس میں پچاس ہزار نوجوانوں کو شامل کیاجارہاہے جنہیں مختلف شعبوں میں ایک سال کی تربیت دی جائے گی۔نواز شریف نے کہا کہ یہ عوام کے مسائل کے حل کیلئے عملی اقدامات کرنے کا وقت ہے دھرنوں کا نہیں ۔ اُنہوں نے کہا کہ جو دوہزار تیرہ کے انتخابات میں کامیاب نہیں ہوسکے ، انہیں 2018کے عام انتخابات کا انتظار کرنا چاہیئے ۔


اُنہوں نے کہا کہ حکومت نے کئی ترقیاتی منصوبے شروع کئے ہیں اور انہیں ریکارڈ مدت میں مکمل کررہی ہے۔وزیراعظم نے کہا کہ آئندہ دس سال میں بجلی ، سڑکوں اور ریلوے کے شعبوں میں پینتیس ارب ڈالر کی سرمایہ کاری ہوگی ۔اُنہوں نے کہا کہ آٹھ سے دس سال میں قومی گرڈ میں اکیس ہزار میگاواٹ بجلی شامل کی جائے گی ۔


وزیر خزانہ اسحق ڈار نے اس موقع پر اظہار خیال کرتے ہوئے کہا کہ موجودہ حکومت معاشرے کے پسماندہ طبقوں کی فلاح وبہبود پر توجہ دے رہی ہے اور نوجوانوں کیلئے چھ سکیموں کا اجرامسلم لیگ نون کی حکومت کی حکمت عملی کا حصہ ہے ۔