وقفہ سوالات کے دوران وفاقی تعلیم اور پیشہ ورانہ تربیت کے وزیر مملکت بلیغ الرحمان نے ایوان کو بتایاکہ یہ رقم اعلیٰ تعلیمی کمیشن کے ذریعے ملک کی تمام سرکاری جامعات میں تقسیم کی جائے گی۔

 تحقیق اورترقی کیلئے ریکارڈ 20 ارب روپے مختص کئے گئے ہیں
04 دسمبر 2014 (14:31)
0

قومی اسمبلی کو آج بتایا گیا کہ تحقیق اور ترقی کے لئے اعلیٰ تعلیمی کمیشن کیلئے بیس ارب روپے مختص کئے گئے ہیں جو ایک ریکارڈ ہے۔وقفہ سوالات کے دوران وفاقی تعلیم اور پیشہ ورانہ تربیت کے وزیر مملکت بلیغ الرحمان نے ایوان کو بتایاکہ یہ رقم اعلیٰ تعلیمی کمیشن کے ذریعے ملک کی تمام سرکاری جامعات میں تقسیم کی جائے گی۔

انہوں نے کہا کہ اعلیٰ تعلیمی کمیشن کو مقامی تقاضوں کو پورا کرنے کیلئے اطلاقی تحقیق پر توجہ مرکوز کرنے کی ہدایت کی گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ تحقیقی اداروں اور صنعتوں کے درمیان رابطے مضبوط بنانے کی کوششیں جاری ہیں تاکہ مقررہ اہداف حاصل کئے جا سکیں۔
انہوں نے کہا کہ ملک میں اب تک دس ہزار سے زائد طلباء نے پی ایچ ڈی کی ہے جبکہ ملک کی مختلف جامعات میں بارہ ہزار سے زائد پی ایچ ڈی سکالرز بھرتی ہیں۔

پروین مسعود بھٹی اور دوسرے ارکان کے توجہ دلاؤ نوٹس کا جواب دیتے ہوئے خزانے کے پارلیمانی سیکرٹری رانا محمد افضل خان نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات کی قیمتوں میں کمی کے باعث روزمرہ کے استعمال کی مختلف اشیاء کے نرخوں میں نمایاں کمی آئی ہے۔


انہوں نے کہا کہ رواں سال ستمبر سے دسمبر تک پٹرولیم کی فی لیٹر کی قیمت ایک سو چھ روپے پچاس پیسے سے کم ہو کر چوراسی روپے ترپن پیسے ہو گئی ہے جس سے انیس فیصد کمی ظاہر ہوتی ہے۔ اسی طرح تین ماہ کے دوران ڈیزل کی قیمت بھی ایک سو آٹھ روپے چونتیس پیسے سے کم ہو کر چورانوے روپے نو پیسے ہو گئی ہے ۔ انہوں نے کہا کہ پٹرولیم مصنوعات استعمال کرنے والوں اور کاشتکار برادری کو قیمتوں میں کمی کا براہ راست فائدہ پہنچا ہے۔


رانا افضل خان نے کہا کہ ٹرانسپورٹ کے کرایوں میں کمی سے بھی روزمرہ کے استعمال کی چیزوں کی قیمتیں کم ہوئی ہیں۔ انہوں نے کہا کہ آنے والے دنوں میں قیمتوں میں کمی کے مزید ثمرات سامنے آئیں گے اور مختلف اشیاء ارزاں نرخوں پر دستیاب ہوں گی۔